وہ باتیں جوموبائل فون پر بات کرتے وقت مدنظر رکھنی چاہیں

وہ باتیں جوموبائل فون پر بات کرتے وقت مدنظر رکھنی چاہیں
وہ باتیں جوموبائل فون پر بات کرتے وقت مدنظر رکھنی چاہیں

  

لاہور(نیوزڈیسک) موبائل فون نے خط و کتابت کا رواج تو ختم کردیاہے لیکن اب پی ٹی سی ایل فون کا بھی صرف دفتری استعمال باقی رہ گیاہے ۔ پاکستان کے شہری علاقوں میں تقریباً ہر شخص کے پاس اپنا موبائل فون ہے اور ایسے میں بعض اوقات فون کے استعمال کے آداب پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے اردگردکے لوگ بھی آپ کے فون سننے یا گھنٹی سے متاثر ہوسکتے ہیں ، ذیل میں کچھ باتیں بتائی جارہی ہیں جن کا فون سننے کے دوران خیال رکھناچاہیے ۔

فون ریسیوکرتے وقت السلام علیکم یا کالر سے اپنے رشتے کی مناسبت سے اچھے الفاظ میں مخاطب کریں

فون پر زور زور سے بات کرنے سے گریز کریں

عوامی مقامات پر اپنے کسی ذاتی مسئلے پر بحث نہ کریں

اپنی بات زبردستی منوانے کی بجائے دوسرے کی بات سنیں اور اپنی باری پر دلیل سے بات کریں

اگر آپ بات کرنے کے ماحول میں نہیں تو صاف بتادیں تاکہ دوسراباربار ایک ہی بات دوہرانے سے بچ جائے

اگرچہ موبائل پر نمبر آرہاہوتاہے مگر پھر بھی دوسرے کے غیرضروری سوالات سے پرہیز کے لیے اپنا تعارف کرادیں ،ایساکرنے سے کال کے دوران مخاطب کا نام پوچھنے کے غیرضروری عمل سے چھٹکارا مل سکتا ہے

 کال سننے والا شخص اگر کال کرنے والے کو پہلے اس کے نام سے مخاطب کر لے تو کال کرنے والے کو شناخت کے جھنجھٹ میں نہیں پڑنا پڑے گا۔

 کسی مقصد کے بغیر کال کرتے ہوئے سننے والے سے اُس کی فراغت کے بارے میں پہلے پوچھ لیں

ٹیلی فونک گفتگوکے خاتمے پر ایک دوسرے کو اچھے القابات سے رخصت کریں

مزید :

تعلیم و صحت -