سعودی عرب کے حق میں بولنے پر اوباما کی امریکہ میں ایسے طریقے سے بے عزتی کہ جان کر آپ دنگ رہ جائیں گے

سعودی عرب کے حق میں بولنے پر اوباما کی امریکہ میں ایسے طریقے سے بے عزتی کہ جان ...
سعودی عرب کے حق میں بولنے پر اوباما کی امریکہ میں ایسے طریقے سے بے عزتی کہ جان کر آپ دنگ رہ جائیں گے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب کے حق میں بولنے پر باراک اوباما کو امریکہ میں تاریخی بے عزتی کا سامنا کرنا پڑ گیا ہے، پہلی بار امریکی کانگریس اور سینیٹ نے ان کا ویٹو مسترد کر دیا ہے۔ عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق باراک اوباما نے اس بل کو ویٹو کیا تھا جس کے تحت نائن الیون حملوں میں مرنیوالوں کے لواحقین سعودی عرب کیخلاف معاوضے کے لیے مقدمہ درج کراسکیں گے۔
سعودی عرب پہلے ہی متنبہ کر چکا ہے کہ اگر بل منظور ہوا تو سعودی عرب امریکا میں موجود اپنے اربوں ڈالر کے اثاثے فروخت کردے گا مگر اس کے باوجود گزشتہ روز امریکی ایوان نمائندگان میں77 کے مقابلے میں348 ووٹوں سے اوباما کا ویٹو مسترد کیا گیا۔ قبل ازیں امریکی سینیٹ نے بھی غالب اکثریت کے ساتھ صدر باراک اوباما کے متاثرین نائن الیون کو سعودی عرب پر مقدمہ کرنے کی اجازت دینے والے بل کو ویٹو کرنے کے اقدام مسترد کر دیا تھا۔

شام پر حملے بند کرو ورنہ مذاکرات معطل،امریکہ کی روس کو دھمکی
نیواڈا سے ڈیموکریٹ سینیٹر ہیری ریڈ نے اس کی مخالفت کی جبکہ97 ارکان نے صدر باراک اوباما کے بل ویٹو کرنے کو مسترد کیا۔ صدر اوباما کے8 سالہ دور صدارت میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے اور یہ صدر اوباما کے لیے ایک بڑادھچکا ہے جنہوں نے ”جسٹس اگینسٹ سپانسرز آف ٹیررازم ایکٹ “بل کے خلاف سخت لابنگ کی تھی۔تاہم ان کی یہ لابنگ کسی کام نہ آئی اور ان کا ویٹو مسترد کر دیا گیا۔ اوباما نے اپنے دورِ صدارت میں 12 بل ویٹو کیے اور اس سے پہلے کوئی بھی مسترد نہیں کیا گیا۔واضح رہے کہ اوباما کے پیشرو جارج ڈبلیو بش نے بھی12ویٹو کیے تاہم ان میں سے4 کو مسترد کر دیا گیا تھا۔