یاث پراچہ اے پی سی این جی اے کے مرکزی چیئرمین منتخب

یاث پراچہ اے پی سی این جی اے کے مرکزی چیئرمین منتخب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور( آن لائن )پاکستان میں پٹرولیم ، گیس اور سی این جی سیکٹر کی معروف شخصیت غیاث پراچہ کو آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن(اے پی سی این جی اے) کے سالانہ انتخابات میں بلا مقابلہ مرکزی چیئرمین منتخب کر لیا گیا ہے۔ وہ گزشتہ بیس سال سے پٹرولیم ، گیس اور سی این جی کی صنعت سے وابستہ ہیں اور سی این جی و گیس سیکٹر کے حالات و معاملات پر گہری نظر رکھتے ہیں۔ ایسوسی ایشن کے سینئر وائس چیئرمین کا انتخاب کراچی کے معروف پٹرولیم اور سی این جی بزنس مین شعیب خانجی نے جیتا۔ صوبہ پنجاب سے تعلق رکھنے والے عرفان غوری کو ایسوسی ایشن کا وائس چیئرمین منتخب کیا گیا ہے جو گزشتہ سال پنجاب میں سی این جی سیکٹر کی بحالی کی جدوجہد میں غیاث پراچہ اور سابق مرکزی چیئرمین عابد حیات و کیپٹن ریٹائرڈ راجہ شجاع کے ساتھ شریک رہے ہیں۔ اپنے انتخاب کے بعد نو منتخب مرکزی چیئرمین غیاث پراچہ نے آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن کے ممبران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے گروپ کے تمام امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہوئے ہیں جس پر میں ملک بھر کے سی این جی ممبران کا شکر گزار ہوں اور سی این جی سیکٹر کی بحالی کی کوششوں کو آگے بڑھاؤں گا ۔
خصوصا سی این جی کی قیمتوں، جی آئی ڈی سی کے معاملے کے فوری اور پائیدار حل، پٹرول سے قیمت کے واضح فرق کو برقرار رکھتے ہوئے پبلک کو سستی سی این جی کی مسلسل فراہمی اور اسٹیشنوں کو گیس کی ریگولر سپلائی کیلئے جدوجہد کرونگا۔ انہوں نے کہا کہ عہدوں سے سبکدوش ہونے والے معزز ممبران کی محنت قابل تحسین ہے کہ انھوں نے انتہائی کٹھن اور نازک حالات میں سی این جی سیکٹر کو بحال رکھنے کی جدوجہد کی اور پنجاب کی سی این جی انڈسٹری کی بحالی کا تاریخی کارنامہ سر انجام دیا۔ غیاث پراچہ نے کہا کہ تمام سی این جی مالکان سے گزارش ہے کہ وہ آپس کے اختلافات بھلا کر پہلے کی طرح سی این جی سیکٹر کہ دنیا میں نمبر ون بنانے کی کوششوں میں ان کا ساتھ دیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم نئی ٹیکنالوجی متعارف کروائیں گے جس سے سی این جی کی آپریشنل کاسٹ کم ہو سکے اور سی این جی بزنس کو لانگ ٹرم کیلئے زندگی ملے گی۔ ہم نئے سیکٹرز کو ساتھ ملا کر پاکستان کی اکانومی کو ایک ٹیم فراہم کریں گے۔ غیاث پراچہ نے حکومت کا شکریہ ادا کیا کہ آج ہم جہاں پہنچے ہیں اور سی این جی سیکٹر جس طرح دوبارہ بحالی کی طرف گامزن ہے تو یہ صرف حکومت کے تعاون کی وجہ سے ممکن ہوا ہے۔ ۔#/s#

مزید :

کامرس -