ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس کا مسلم ٹاؤ ن میں ہنزہ گھی ملز کے ہیڈ آفس پر دھاوا

ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس کا مسلم ٹاؤ ن میں ہنزہ گھی ملز کے ہیڈ آفس پر دھاوا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(کامرس رپورٹر)ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس کی ٹیم نے مسلم ٹاؤ ن میں واقع ہنزہ گھی ملز کے ہیڈ آفس پر دھاوا بو ل دیااور مذکورہ مل کے ساتھ چھ دیگر گھی ملوں کا ریکارڈ بھی زبر دستی اٹھا کر لے گئے ۔کمپیوٹرز ، لیپ ٹاپ اور سیکیورٹی کیمرے بھی بحق سر کار ضبط کر لیے گئے اور دفاتر کا سارا سامان بھی تلپٹ کر دیا ۔کمپنی ڈائر یکٹرز اور سٹاف کو بھی ڈرایا دھمکایا ۔بتایا گیا ہے کہ مسلم ٹاؤ ن کے نزدیک کنال روڈ پر سویرا بناسپتی ،ہنزہ گھی ملزسمیت وناسپتی اور آئل بنانے والی سات کمپنیوں کے صدر دفاتر ہیں۔جمعرات کے روز ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس کے ڈپٹی کمشنر اختر عباس کی سر براہی میں پانچ چھ افراد پر مشتمل ایک ٹیم ان دفاتر میں آئی اور وہاں مو جو د سٹاف سے سارا ریکارڈ حوالے کرنے کو کہا کمپنی کے ڈائریکٹر وحید چوہدری نے وجہ دریافت کی تو ٹیم لیڈر نے ہنزہ گھی ملز کے چالان / وارنٹ دکھائے پھر خود ہی سویرا وناسپتی ، ہنزہ گھی ملز اور پانچ دیگر کمپنیوں کا ریکارڈ بھی زبر دستی اٹھا لیا ۔سیکیورٹی کی غر ض سے لگائے گئے کیمرے بھی قبضے میں لے لیے ۔پھر کسی قسم کی رسید دیے بغیر سامان گاڑی پر لاد کر لے گئے اس حوالے سے ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس حکام کا دعوی ہے کہ ہنزہ گھی ملز ایکسا ئز ڈیو ٹی میں کروڑوں روپے کی بے قاعدگی میں ملو ث ہے اور ان کے خلاف بڑے پیمانے پر تحقیقات ہورہی ہیں ۔ دوسری جانب کمپنی کے پروپرائیٹر وحید چوہدری کا کہنا ہے کہ یہ الزام بے بنیاد اور من گھڑت ہے ایکسائز ڈیو ٹی تو کراچی پورٹ پر ہی لے لی جاتی ہے۔ ریونیو والوں کو کیسے پتہ چلا کہ کمپنی ڈیفالٹر ہے ہمارا نہ تو کو ئی آڈٹ کروایا گیا اور نہ ہی کو ئی انکوائری ہوئی ۔ ہمارے ساتھ تو کسی نے رابطہ تک نہیں کیا۔ان کا کہنا ہے کہ صنعت کاروں کو اوچھے ہتھکنڈوں کے ذریعے خوف ذدہ کیا جارہا ہے ہماری عزتیں اچھالی جارہی ہیں چھاپہ مار ٹیم کس قانون اور ضابطے کے تحت چھ گھی ملوں کا ریکارڈ اٹھا لے گئی اگر ہنزہ گھی ملز بے قاعدگی کی مر تکب ہوئی ہے تودوسری ملوں کا کیا قصور ہے ۔ وحید چوہدری کا کہناہے کہ سیکیورٹی کیمرے اٹھا کر ہمار ا سسٹم بند کر دیا گیا جس سے اربوں روپے کے معاملات غیر محفو ظ ہوگئے انھوں نے پاکستان کو بتایا کہ ہم نے اس معاملے میں ان لینڈ ریو نیو انٹیلی جنس کے سر براہ شاہد حسین چٹھہ سے رابطہ کیا تو ان کا کہنا تھا کہ ہم ہنزہ کے سوا باقی تمام گھی ملوں کا ریکارڈ ابھی آپ کو واپس کر دیں گے جو ہمیں رات گئے تک واپس نہیں کیا گیا ۔

مزید :

صفحہ آخر -