یورپ نے موسیقی کے ذریعے بگڑی ہوئی روحوں کا علاج کرنے کا اعلان کردیا

یورپ نے موسیقی کے ذریعے بگڑی ہوئی روحوں کا علاج کرنے کا اعلان کردیا
یورپ نے موسیقی کے ذریعے بگڑی ہوئی روحوں کا علاج کرنے کا اعلان کردیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

برسلز(مانیٹرنگ ڈیسک) یورپی ممالک میں دہشت گردی کی بڑھتی وارداتوں اور یورپی شہریوں کی شدت پسندی کی طرف رغبت میں اضافے سے پریشان یورپی یونین نے اس کا ایک انوکھا علاج دریافت کر لیا ہے۔ چونکہ زیادہ تر نوجوان شدت پسندی کی طرف راغب ہو رہے ہیں اس لیے یورپی یونین نے اپنے ان بگڑے نوجوانوں کو کلاسیکی موسیقی کے ذریعے سدھارنے کا اعلان کر دیا ہے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق یورپی پارلیمنٹ کے اراکین برطانیہ کی یونین سے علیحدگی کے بعد متفکر ہیں اور باقی ماندہ ممالک کو متحد رکھنے کے لیے اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ نوجوانوں کو موسیقی کے ذریعے شدت پسندی سے دور کرنے کا منصوبہ بھی انہی اقدامات کا حصہ ہے۔ ان اقدامات پر اربوں یوروز خرچ کیے جائیں گے۔

یہ خوبصورت نوجوان لڑکی اپنا کنوارہ پن انٹرنیٹ پر فروخت کررہی ہے، وجہ ایسی کہ آپ بھی اس کی ہمت کو داد دیں گے
رپورٹ کے مطابق یورپی یونین اپنے نوجوانوں کو شدت پسندی سے دور رکھنے کے لیے تمام بڑے یورپی شہروں میں کلاسیکی موسیقی کے کنسرٹ کروائے گی جن میں نوجوانوں کو مفت شرکت کی سہولت دی جائے گی۔ اس منصوبے کے تحت یورپی نوجوانوں کے ان طبقات کو ٹارگٹ کیا جائے گا جو انتہاءپسندوں کا آسان شکار ہو سکتے ہیں۔ انہیں موسیقی کے کنسٹرٹس کے ذریعے دیگر نوجوانوں سے ملاقات کے مواقع فراہم کیے جائیں گے تاکہ وہ اپنے انتہاءپسندانہ خیالات سے باہر آ سکیں۔ تاہم اس منصوبے کی مخالفت بھی کی جا رہی ہے۔ رکن یورپی پورلیمنٹ پاﺅل نوٹال کا کہنا ہے کہ ”موسیقی کے ذریعے نوجوانوں کو انتہاءپسندی سے دور رکھنے کی یہ تجویز بیکار ہے۔ ہمیں اس مسئلے کاکوئی مناسب اور پائیدار حل تلاش کرنا ہو گا۔ ہمیں نوجوانوں کے انتہاءپسندی کی طرف راغب ہونے کی اصل وجوہات کی کھوج لگانی ہو گی۔ کنسٹرٹس جیسے اقدامات صورتحال کو مزید خراب کریں گے۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -