ریپ کیس درج نہ کرنے پرایبٹ آباد کے2ایس ایچ اوز سمیت 11اہلکار معطل

ریپ کیس درج نہ کرنے پرایبٹ آباد کے2ایس ایچ اوز سمیت 11اہلکار معطل
ریپ کیس درج نہ کرنے پرایبٹ آباد کے2ایس ایچ اوز سمیت 11اہلکار معطل

  

لاہور (ویب ڈیسک) انسپکٹرجنرل خیبر پختونخوا پولیس صلاح الدین محسود نے ریپ کا مقدمہ درج کرنے سے مبینہ طور پر انکار کرنےپر ایبٹ آباد کے 2تھانوں کے سٹیشن ہاؤس افسران اور امام سمیت 11 اہلکاروں کو معطل کرنے کا حکم دے دیا۔

آئی جی کے پی صلاح الدین محسود نے متاثرہ خاتون کی شکایت پر احکامات جاری کئے اور ڈسٹرکٹ پولیس افسر ایبٹ آباد نےاحکاما ت پر عملدرآمد کیا۔متاثرہ خاتون نے آئی جی کو بتایا کہ انہیں ساہیوال سے اغوا کیا گیا ، ریپ کیا گیا اور ایبٹ آباد میں لا کر چھوڑ دیا گیا ۔انہوں نے اغواء اور ریپ پر سب سے پہلے میرپور پولیس سٹیشن میںایف آئی آر درج کرانے کے لئے رجوع کیا لیکن وہاں موجود افسران نے انکار کرتے ہوئے انہیں حویلیاں پولیس سٹیشن میں مقدمہ درج کرانے کا مشورہ دیا۔ حویلیاں مذکورہ پولیس سٹیشن سے 12 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔میرپور پولیس نے متاثرہ خاتون کو ایک ٹرک ڈرائیور کے حوالے کر کے انہیں حویلیاں پہنچانے کا حکم دیا جس کے بعد ٹرک ڈرائیور نے بھی ان کا جنسی استحصال کیا۔جب متاثرہ خاتون حویلیاں پولیس سٹیشن پہنچیں تو وہاں کے ایس ایچ او نے بھی ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کر دیا۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -خیبرپختون خواہ -ایبٹ آباد -