پی ڈی ایم کا 11اکتبور سے حکومت مخالف تحریک کا اعلان، پہلا جلسہ کوئٹہ میں ہو گا 

پی ڈی ایم کا 11اکتبور سے حکومت مخالف تحریک کا اعلان، پہلا جلسہ کوئٹہ میں ہو ...

  

 اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم)نے حکومت مخالف تحریک کااعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ 11 اکتوبر کو بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں پہلا جلسہ عام ہو گا۔جس سے پورے ملک میں تحریک کا آغاز ہوگا اور یہ تحریک غیر جمہوری عمل سے نجات دلائے گی، پی ڈی ایم کی سٹیئرنگ کمیٹی بنائی گئی ہے جس کے سربراہ احسن اقبال ہوں گے اور اس میں ہر جماعت سے دو ممبران شامل ہوں گے۔ پیر کو سٹیئرنگ کمیٹی کی دوسری میٹنگ ہو گی جس میں آئندہ کیلئے مزید لائحہ عمل طے کیا جائے گا، پارلیمنٹ ریموٹ کنٹرول کے ذریعے چل رہی ہے، ہم قانون کی بالادستی، آزاد عدلیہ اور عوامی حقوق کے تحفظ کے لیے کھڑے ہوئے ہیں،اس حکومت نے سیاسی انتشار پیدا کرکے جمہوریت اور معاشی جمہوریت پر حملہ کیا گیا۔حکمران اپنی نااہلی کا ملبہ قومی اداروں پر پھینک رہے ہیں اور وزرا قومی اداروں کو متنازعہ بنارہے ہیں،نیب صرف پگڑیاں اچھالنے کیلئے اپوزیشن رہنماؤں کو تنگ اور گرفتار کررہی ہے،ہم اس طرح کے ناجائز دبا ؤکو قبول نہیں کریں گے،سلیکٹڈ حکومت شوپیس ہے اس کے پیچھے قوتوں سے کہتے ہیں ان کی پشت پناہی چھوڑ دیں۔ہماری سیاسی جنگ ہے ہمارا جھگڑا کسی ادارے سے نہیں ہے۔منگل کو اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم)کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا جس میں مسلم لیگ (ن)کے شاہدخاقان عباسی، احسن اقبال، ایازصادق اورخواجہ سعدرفیق، پیپلزپارٹی کی جانب سے راجہ پرویزاشرف، نیئر بخاری اور شیری رحمان،جمعیت علمائے اسلام کی طرف سے مولانا عبدالغفورحیدری، اکرم درانی، شاہ اویس نورانی، دیگر جماعتوں کی جانب سے میاں افتخار، عثمان کاکڑ، جہانزیب جمالدینی اور دیگر رہنماؤں نے شرکت کی۔اجلاس میں شہباز شریف کی گرفتاری اور ملکی سیاسی صورتحال پر غور کیا گیا اور آئندہ کی حکمت عملی بنائی گئی۔مشترکہ پریس کانفرنس سے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ملک میں جمہوریت سلب کی جا رہی ہے، ملک میں آئینی تسلسل اور پارلیمنٹ پر قدغن ہے۔ چاروں صوبائی دارالحکومت میں پی ڈی ایم کے جلسے ہوں گے، دیگر شہروں میں بھی چھوٹے جلسے ہو سکتے ہیں، اگلے پیر کو سٹیئرنگ کمیٹی کی دوسری میٹنگ ہو گی جس میں آئندہ کیلئے مزید لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔راجا پرویز اشرف نے کہا کہ پی ڈی ایم کے اجلاس میں اپوزیشن لیڈر کی گرفتاری پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے، اس عمل سے جمہوریت اور جمہوری ادارے کمزور ہونگے اور عوام کے غم و غصہ میں اضافہ ہوگا۔ نیب احتساب تو کر رہا ہے لیکن اس طرح لوگوں کی تضحیک نہ کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ سٹیئرنگ کمیٹی کے کنوینئر ہر ماہ بدلتے رہیں گے،پہلے مہینے کی کنوینر شپ ن لیگ کے پاس ہے اور احسن اقبال اس کمیٹی کے کنوینئر ہوں گے۔احسن اقبال نے کہا کہ حکومت نے سیاسی انتشار پیدا کرکے جمہوریت اور معاشی جمہوریت پر حملہ کیا ہے،کمزور آدمی سے جینے کا حق تک چھین لیا گیا ہے،حکمراں اپنی نااہلی کا ملبہ قومی اداروں پر پھینک رہے ہیں اور وزرا قومی اداروں کو متنازعہ بنارہے ہیں۔جمعیت علماء اسلام (ف) کے سیکرٹری جنرل مولانا غفور حیدری نے کہا کہ نیب صرف پگڑیاں اچھالنے کیلئے اپوزیشن رہنماؤں کو تنگ اور گرفتار کررہی ہے،ہم اس طرح کے ناجائز دبا ؤکو قبول نہیں کریں گے،سلیکٹڈ حکومت شوپیس ہے اس کے پیچھے قوتوں سے کہتے ہیں ان کی پشت پناہی چھوڑ دیں،ہماری سیاسی جنگ ہے ہمارا جھگڑا کسی ادارے سے نہیں ہے،عمرانی ٹولے سے ہونے والی جنگ ہم جیتیں گے۔

 پی ڈی ایم 

دو کالم

مزید :

صفحہ اول -