اشیاء کے معیار مقررکرنے پر پنجاب فوڈ اتھارٹی کیخلاف دائر درخواستیں نمٹا دیں 

اشیاء کے معیار مقررکرنے پر پنجاب فوڈ اتھارٹی کیخلاف دائر درخواستیں نمٹا ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک اور جسٹس شاہد بلال حسن پرمشتمل ڈویژن بنچ نے قراردیاہے کہ بناسپتی اور کھانے پینے کی دیگر اشیاء کے معیار مقررکرنے کے حوالے سے پاکستان سٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی (پی ایس کیو سی اے)کو صوبائی اداروں پر فوقیت حاصل ہے فاضل بنچ نے یہ آبزرویشن بناسپتی اور کھانے پینے کی دیگر اشیاء کے معیار مقررکرنے پر پنجاب فوڈ اتھارٹی کے خلاف دائر درخواستیں نمٹاتے ہوئے جاری کی مختلف گھی ملز مالکان کی طرف سے دائر درخواستوں میں پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے بناسپتی کے معیار طے کرنے کے طریقہ کار کو چیلنج کیاگیاتھا،گزشتہ روز عدالت میں مشترکہ مفادات کی کونسل کا فیصلہ پیش کیا گیاجس کے مطابق وفاقی ادارے پاکستان سٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی (پی ایس کیو سی اے)کو ہی بناسپتی اور کھانے پینے کی دیگر اشیاء کے معیار مقررکرنے کااختیارحاصل ہے، مشترکہ مفادات کی کونسل نے یہ بھی قراردے رکھاہے کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی سمیت صوبائی اداروں کو گھی سمیت دیگر اشیاء کی تیاری کے معیار مقرر کرنے کا اختیار نہیں،اس حوالے سے وفاقی ادارے کے احکامات کوصوبائی اداروں کے احکامات پر فوقیت حاصل ہوگی عدالت نے مشترکہ مفادات کی کونسل کے فیصلے کی روشنی زیر نظر درخواستیں نمٹادیں عدالت نے قراردیا کہ اگر صوبہ کے کسی قسم کے تحفظات ہیں تو وہ مشترکہ مفادات کی کونسل سے رجوع کرسکتاہے۔

درخواستیں نمٹا

مزید :

صفحہ آخر -