ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کیخلاف درخواست، سرکاری حکام وضاحت کیلئے طلب 

   ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کیخلاف درخواست، سرکاری حکام وضاحت کیلئے طلب 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف دائر درخواست پرڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی پاکستان (ڈریپ) اورمتعلقہ سرکاری حکام کووضاحت کیلئے طلب کرلیا،فاضل جج نے جوڈیشل ایکٹوازم پینل کی درخواست کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ مریضوں کی زندگی کا تحفظ کیا جانا ان کا آئینی حق ہے، بتایا جائے حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ روکنے کیلئے کیا اقدامات کئے ہیں؟درخواست گزار کے وکیل اظہر صدیق نے عدالت سے استدعا کی کہ ادویات کی قیمتوں کاجائزہ لینے کے لئے عدالتی کمیٹیاں تشکیل دی جائیں،درخواست گزار کے وکیل نے مزید موقف اختیار کیا کہ ادویات کی قیمتوں میں 262فیصد اضافہ کر دیا گیا پہلے ہی جان بچانے والی اور دیگر ادویات عوام کی پہنچ سے دور ہیں، ادویات کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ حکومت کی ناقص کارکردگی کو ظاہر کرتا ہے، کورونا وائرس لاک ڈاؤن اور معاشی حالات کی وجہ سے عوام پہلے مہنگائی سے پریشان ہے ادویات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کو کالعدم قرار دیا جائے عدالت نے متعلقہ حکام کویکم اکتوبر کے لئے طلبی کا نوٹس جاری کیاہے  دریں اثناء مسٹر جسٹس جواد حسن نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف ایک دوسرے شہری کی طرف سے دائر درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے دیاہے تاہم مسٹر جسٹس شاہد محمود سیٹھی کے روبرجوڈیشل ایکٹو ازم پینل کی مذکورہ درخواست کی مزیدسماعت کل یکم اکتوبر کو ہوگی 

وضاحت طلب 

مزید :

صفحہ آخر -