کراچی:50 ہزار سے زائد کالجز میں داخلوں سے محروم  

کراچی:50 ہزار سے زائد کالجز میں داخلوں سے محروم  

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)طلباء ایک امتحان میں پاس ہوئے تو دوسرا امتحان اب انتظار کر رہا ہے، 50 ہزار سے زائد طلبہ گیارہویں جماعت میں داخلہ سے محروم ہوگئے۔کورونا وائرس کی صورتحال کے باعث حکومتی پروموٹ پالیسی کے تحت تمام طلبا کو پاس تو کردیا گیا، لیکن کالجوں میں اتنے طلباء کی گنجائش ہی موجود نہیں ہے۔ڈی اور ای گریڈ میں میٹرک پاس ہونے والے50 ہزار سے زائد طلبہ گیارہویں جماعت میں داخلہ سے محروم ہوگئے۔ کراچی کے 168 سرکاری کالجوں میں گیارہویں جماعت میں داخلہ پالیسی بری طرح ناکام ہوگئی۔100فیصد طلبہ پاس ہونے کے باعث کراچی کے سرکاری کالجوں میں 50 ہزار سے زائد طلبہ کے لیے کوئی سیٹیں نہیں ہیں۔ محکمہ تعلیم نے کراچی کے تمام کالجوں میں 1 لاکھ 16 ہزار 340 طلبہ کو داخلے دینے کا اعلان کیا۔رواں سال صرف میٹرک بورڈ کراچی سے ایک لاکھ 68 ہزار 880 طلبہ پاس ہوچکے ہیں۔ 52 ہزار 540 طلبہ کو گیارہویں جماعت داخلے کے لیے کراچی کے کسی سرکاری کالج میں گنجائش نہیں، گریڈ ڈی میں 37 ہزار 309 اور گریڈ ای میں 8 ہزار 230 طلبہ پاس ہوئے ہیں۔ محکمہ تعلیم حکام نے داخلوں کے لیے کوئی ہوم روک نہیں کیا۔

مزید :

صفحہ آخر -