داماد کو قتل کرنے کا شبہ‘ عدالتی حکم پر 3  سسرالیوں کیخلاف مقدمہ درج کرنیکا حکم

 داماد کو قتل کرنے کا شبہ‘ عدالتی حکم پر 3  سسرالیوں کیخلاف مقدمہ درج کرنیکا ...

  

 رحیم یارخان (بیورو رپورٹ)گھریلوناچاقی پر بیوی اور ساس کو فائرنگ کرکے موت کے گھات اتارکر خودکشی کرنے والے(بقیہ نمبر24صفحہ 6پر)

 25سالہ داماد کو قتل کیئے جانے کے شبہ  پر ایڈیشنل اینڈسیشن جج نے برادر نسبتی سمیت تین سسرالیوں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔ تفصیل کے مطابق 27جولائی کے روز موضع رم ڈیرہ جتاں کے رہائشی 25سالہ شکیل احمد نے خود کو پسٹل سے فائر مارکر خودکشی کرلی تھی جس نے چند روز قبل گھریلوناچاقی پر سکھر کے علاقہ میں فائرنگ کرکے اپنی حاملہ بیوی اور ساس کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتاردیا تھا جس کے خلاف تھانہ سکھر میں قتل کے مقدمہ کا اندراج بھی کیا گیا تھااقدام خودکشی کرنے پر مقتول شکیل احمد کے بھائی مریدحسین نے ایڈیشنل اینڈسیشن جج کی عدالت میں رٹ دائر کرتے ہوئے شبہ ظاہر کیا کہ اس کے مقتول بھائی شکیل احمد کو کمرے میں سونے کے دوران سکھر کے رہائشی برادر نسبتی ریاض احمد دیگر سسرالی رشتہ داروں محمدعلی اور محمداشرف نے فائر مارکر قتل کیا ہے‘ جبکہ پولیس کی جانب سے عدالت کوبتایا گیا کہ تحقیقات میں مقتول شکیل احمد کے خودکشی کرنا ثابت ہوا ہے‘جس کے باوجود فاضل عدالت نے مقتول کے بھائی مرید حسین کے وکیل کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے برادری نسبتی سمیت تین افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے کے احکامات جاری کردیئے‘ جس پر عملدرآمد کرتے ہوئے پولیس نے مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -