ڈسکہ کچہری، مخالف گروپوں میں فائرنگ کا تبادلہ، 3افراد قتل، 2راہگیر زخمی 

ڈسکہ کچہری، مخالف گروپوں میں فائرنگ کا تبادلہ، 3افراد قتل، 2راہگیر زخمی 

  

ڈسکہ(نامہ نگار،تحصیل رپورٹر) ڈسکہ کچہری میں دو مخالف گروپوں میں فائرنگ، تین افرادجاں بحق،2 راہگیربھی زخمی،وقوعہ کے بعد سول ہسپتال میں پولیس کی بھاری نفری تعینات،علاقہ میں خوف و ہراس پھیل گیا۔تفصیلات کے مطابق پنڈوریاں کا رہائشی جنید خاں ولد نیاز خان اپنے بھائی شعیب ولد نیاز خان کے قتل کے مقدمہ کے سلسلہ میں پیشی پر عدالت آیا تو وہاں مخالف پارٹی سرور خان گروپ بھی وہاں آگئے جس پر دونوں پارٹیوں نے ایک دوسرے کو دیکھتے ہی ایک دوسرے پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجہ میں جنید خان،احسان سرور،اکرم،بلال پطرس وغیرہ زخمی ہو گئے اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہو ئے جنید خان موقع پر ہی دم توڑ گیا جبکہ دیگر زخمیوں کو طبی امداد کیلئے سول ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہسپتال پہنچ کرپطرس مسیح بھی جاں بحق ہو گیا جبکہ تشویش ناک حالت کے پیش نظر احسان سرور کو گوجرانوالہ ریفر کر دیا گیا لیکن وہ بھی راستہ ہی میں دم توڑ گیا۔ نعشیں ہسپتال میں منتقل کر دی گئیں۔واقعہ کی اطلاع پر ڈی پی او سیالکوٹ مستنصر فیروز ڈسکہ پہنچے اور ڈی ایس پی سرکل ڈسکہ کو امن و امان برقرار رکھنے سمیت ملزموں جلد گرفتاری کا حکم دیا۔ یاد رہے کہ دونوں خاندانوں میجرسلیم نواز خاں مرحوم اورسرور خاں گروپوں میں دیرینہ دشمنی چل آرہی ہے۔ 2010میں مقتول شعیب نیاز خان کے داد امیجر سلیم نوازخان کو قتل کیا گیا تھا جبکہ2011میں مقتول کے والد نیاز احمد خان اور چچا شہباز خان کو پرانی کچہری ڈسکہ پیشی کے دوران ملزمان نے فائرنگ کر کے موت کے گھاٹ اتاردیا تھا جس کے تمام ملزمان بری ہو چکے ہیں۔5اگست 2020کو شعیب نیاز خاں بھی اسی دشمنی کی بھینٹ چڑھ گیا تھا۔ اب تک 11 اس دیرینہ دشمنی کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں۔۔

افراد قتل

مزید :

پشاورصفحہ آخر -