کل رات کئی خوابِ پریشاں نظر آئے | رئیس امروہوی |

کل رات کئی خوابِ پریشاں نظر آئے | رئیس امروہوی |
کل رات کئی خوابِ پریشاں نظر آئے | رئیس امروہوی |

  

کل رات کئی خوابِ پریشاں نظر آئے 

جو شہر کہ آباد تھے ویراں نظر آئے 

بکھری ہوئی روندی ہوئی لاشوں سے گزر کر 

ٹوٹے ہوئے مینار شہیداں نظر آئے 

کہسارِ ہمالہ کی جھلک خواب میں دیکھی 

گنگا میں اُبلتے ہوئے طوفاں نظر آئے 

پہلے تو کسی قریۂ برباد میں ٹھہرے 

آگے جو بڑھے گورِ غریباں نظر آئے 

مہکی ہوئی اجداد کی خوشبو سے ہوائیں 

ہر گام پہ آثارِ عزیزاں نظر آئے 

جو مطلعِ تقدیس محبت تھے وہ چہرے 

خفگی کے سبب ہم سے گریزاں نظر آئے 

ہم جن کی پریشانیِ خاطر کا سبب تھے 

وہ عالمِ رویا میں پریشاں نظر آئے 

اک دامنِ عصمت کی کرن دور سے پھوٹی 

دامن پہ کئی گوہر غلطاں نظر آئے 

اس شہر کو جو شخص کے مولد کا شرف ہو 

وہ شخص اسی شہر میں مہماں نظر آئے 

لب پر ہے رئیسؔ اپنے یہ مصرع کئی دن سے 

کل رات کئی خواب پریشاں نظر آئے 

شاعر:رئیس امروہوی 

(شعری مجموعہ"حکایاتِ نے":سالِ اشاعت 1989)

Kall    Raat   Kai   Khaab -e-Pareshaan  Nazar   Aaey

Jo   Shehr   Keh   Abaad   Thay   Veraan   Nazar   Aaey

Bikhri     Hui   Raondi   Hui   Lashon    Say   Guzar   Kar

Tootay   Huay   Menaar-e-Shaheedaan   Nazar   Aaey

Kohsaar-e-Hamaala   Ki   Jhalak   Khaab   Men   Dekhi

Ganga   Men   Ubaltay   Huay    Toofaan   Nazar   Aaey

Pehlay   To   Kisi   Qarya-e-Barbaad   Men   Thehray 

Aagay   Jo   Barray   Gor-e-Ghareebaan   Nazar   Aaey

Mehki   Hui    Ajdaad   Ki   Khushbo   Say   Hawaaen

Har    Gaam   Pe   Asaar-e-Azeezaan   Nazar   Aaey 

Jo   Matla -e-Taqdees -e-Muhabbat   Thay    Wo   Chehray

Khafgi   K   Sabab   Ham    Say    Gurezaan   Nazar   Aaey

Ham   Jin   Ki   Preshaani-e- Khaatir   Ka   Sabab   Thay

Wo   Aalam-e-Roya   Men   Preshaan   Nazar     Aaey

Ik   Daaman-e-Ismat   K   Kiran   Door   Say   Phooti

Daaman   Men    Kai   Gohar-e-Ghaltaan   Nazar   Aaey

Uss   Shehr   Ko    Jiss   Shakhs   K   Moallid   Ka    Sharaff   Ho

 Wo   Shakhs   Usi   Shehr   Men   Mehmaan   Nazar   Aaey

Lab   Par    Hay    RAIS    Apnay  Yeh   Misraa   Kai   Din   Say

"Kall   Raat   Kai    Khaab   Preshaan   Nazar   Aaey"

Poet: Rais    Amrohvi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -