اے مرے خوابِ حسیں!| رئیس فروغ |

اے مرے خوابِ حسیں!| رئیس فروغ |
اے مرے خوابِ حسیں!| رئیس فروغ |

  

اے مرے خوابِ حسیں!

میں کہیں ہوں یا نہیں

سارے پربت بن گئے

میرے دشمن کی جبیں

اپنے آنگن کو کہوں

حادثوں کی سر زمیں

روز میرے شہر میں

آگ لگتی ہے کہیں

اوس میں چلتی ہوا

نیند میں بھیگے حسیں

میرے آنسو کے لیے

آب جو کی آستیں

کس دکاں سے لاؤں میں

اپنے ہونے کا یقیں

شاعر: رئیس فروغ

(شعری مجموعہ"رات بہت ہوا چلی"  )

Ay   Miray   Khaab-e-Haseen

Main   Kahen   Hun    Ya   Nahen

Saaray   Parbat   Ban   Gaey

Meray   Dushman   Ki   Jabeen

Apnay   Aangan   Ko   Kahun

Haadson   Ki   Sar   Zameen

Roz   Meray   Shehr   Men

Aag   Lagti  Hay   Kaheen

Aos   Men    Chalti   Hawaa

Neend   Men   Bheegay   Haseen

Meray   Aansoo   K   Liay

Aab   Jo   Ki   Aasteen

Kiss   Dukaan   Say    Laaun   Main

Apnay   Honay   K a   Yaqeen

Poet: Rais    Farogh

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -