یوں بھی تو راس روح کو تنہائی آ   گئی| رئیس وارثی |

یوں بھی تو راس روح کو تنہائی آ   گئی| رئیس وارثی |
یوں بھی تو راس روح کو تنہائی آ   گئی| رئیس وارثی |

  

یوں بھی تو راس روح کو تنہائی آ   گئی

ٹھوکر لگی تو ہم کو بھی دانائی آ   گئی

حیراں ہوں میرا نام ہے اُس کی زُبان پر

پتھر میں کیسے قوتِ گویائی آ   گئی

ہم آگئے تھے یوں تو فریبِ وصال میں

لیکن نظر میں ہجر کی سچائی آ   گئی

اس یوسفِ مثال کے لمسِ لباس سے

یعقوب کی نگاہ کی میں بینائی  آ   گئی 

اُس پھول سے بدن کا نام لیا جو ریئس

موسم کے زرد چہرے پہ رعنائی آ  گئی

شاعر: رئیس وارثی 

(شعری مجموعہ" آئینہ ہوں میں":سال اشاعت؛دوسرا یڈیشن،2008  )

Yun   Bhi   To   Raas   Rooh   Ko  Tanhaai   Aa   Gai 

Thokar   Lagi   To   Ham   Ko    Bhi   Danaai   Aa   Gai 

Heraan   Hun   Mera   Naam   Hay   Uss   Ki   Zubaan   Par

Patar   Men   Kasiay    Quwaat-e-Goyaai   Aa    Gai 

Ham   Aa   Gay   Yun   To    Faraib-e-Visaal   Men

Lekin   Nazar   Men   Hijr   Ki   Sachhaai   Aa   Gai 

Uss   YOUSAF-e-Jamaal   K   Lams-e-Libaas   Say

YAQOOB   Ki    Nigaah   Men   Beenaai Aa   Gai

Uss   Phool   Say   Badan   Ka    Liya    Naam    Jo   RAEES

Maosam   K    Zard    Chehray   Pe   Raanaai   Aa   Gai 

Poet: Raees   Warsi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -