شہرِ وفا میں کیسااُجالا ہے رات کو | رئیس وارثی |

شہرِ وفا میں کیسااُجالا ہے رات کو | رئیس وارثی |
شہرِ وفا میں کیسااُجالا ہے رات کو | رئیس وارثی |

  

شہرِ وفا میں کیسااُجالا ہے رات کو

سورج کسی کی یاد کا نکلا ہے رات کو

اوڑھا ہے کس نے رات کی رانی کا پیرہن

یہ کون چاندنی میں سلگتا ہے رات کو

مجھ کو سکوتِ شب میں جگانے کے واسطے

گلزار کشتِ جاں کا مہکتا ہے رات کو

وہ پر سکون ہے نیند کی آغوش میں مگر

اکثر خیال اُس کا ستاتا ہے رات کو

برفا  رہی ہے رات کے منظر   کو   چاندنی

احساس کا الاؤ  دہکتا ہے رات کو

اب تک حصارِ شب تو نہ ٹوٹا مگر رئیس

ہم نے صحرا کا خواب تو دیکھا ہے رات کو

شاعر: رئیس وارثی

(شعری مجموعہ" آئینہ ہوں میں":سال اشاعت؛دوسرا یڈیشن،2008  )

Shehr-e-Wafa   Men   Kaisa   Ujaala   Hay   Raat   Ko

Sooraj   Kisi   Ki Yaad   Ka   Nikla    Hay   Raat   Ko

Orrha   Hay   Kiss   Nay   Raat   Ki   Raani   Ka   Pairhan

Yeh   Kon   Chaandni   Men   Sulagta   Hay   Raat   Ko

Mujh   Ko   Sakoot-e -Shab   Men   Jagaanay   K   Waastay

Gulzar   Kasht-e-Jaan    Ka    Mahakta   Hay   Raat   Ko

Wo     Pur   Sukoon   Hay   Neend   Ki   Aaghosh   Men   Magar

Aksar   Khayaal   Uss   Ka   Sataata   Hay   Raat   Ko

Barfa    Rahi   Hay   Raat   K  Manzar   Ko   Chaandni

Ehsaas   Ka   Alaao   Dahakta   Hay   Raat   Ko

Ab   Tak   Hasaar-e-Shab   To   Na   Toota   Magar    RAEES

Ham   Nay    Sahar   Ka   Khaab   To    Dekha   Hay   Raat   Ko

Poet: Raees   Warsi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -