چھ ماہ تک 13سالہ لڑکی کوزنجیروں میں جکڑ کررکھنے والے ”سیاستدان“ کو ایک ہی دن بعد رہائی مل گئی

چھ ماہ تک 13سالہ لڑکی کوزنجیروں میں جکڑ کررکھنے والے ”سیاستدان“ کو ایک ہی دن ...
چھ ماہ تک 13سالہ لڑکی کوزنجیروں میں جکڑ کررکھنے والے ”سیاستدان“ کو ایک ہی دن بعد رہائی مل گئی

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ملازمہ کو چھ ماہ تک زنجیروں میں جکڑکر گھرمیں قید رکھنے والے سابق رکن قومی اسمبلی کوگرفتاری کے ایک دن بعد ہی ضمانت پر رہاکردیاگیاہے ۔ سابق ایم این اے لیاقت عباس بھٹی کو جوہر ٹاﺅن پولیس نے ماڈل ٹاﺅن کچہری میں پیش کیاجہاں عدالت نے گھریلو ملازمہ پرتشدد کے الزام میں گرفتار سابق ایم این اے لیاقت عباس بھٹی کوجوڈیشل ریمانڈپر جیل بھجوانے کے فیصلے کے فوری بعد ضمانت بھی منظور کر لی اور رہائی کا حکم دیدیا۔لاہورپولیس نے جمعہ کوجوہر ٹاﺅن میں سابق ایم این اے لیاقت علی بھٹی کی رہائش گاہ پرچھاپا مارکردوسری منزل پرزنجیروں میں جکڑی 13سالہ شاہدہ کوبازیاب کرالیاگیااور مقدمہ درج کرکے لیاقت عباس بھٹی کو گرفتار کرلیاتھا۔نوعمر شاہدہ نے بتایاتھا کہ اس کے والدین نے قرض لیا، ادا نہ کرنے پر اسے زنجیروں میں جکڑ دیا گیا۔ شاہدہ کو مبینہ طور پر گزشتہ 6 ماہ سے زنجیروں میں جکڑ کر سرونٹ کوارٹرز میں قید رکھا گیا تھا۔ملزم لیاقت عباس بھٹی کوہفتہ جوڈیشل مجسٹریٹ حفیظ الرحمن کی عدالت میں پیش کیاگیا ،جہاں وکلاءکی درخواست پر میڈیاٹیموں کولیاقت بھٹی کی کوریج سے روک دیاگیا۔عدالت نے پہلے ملزم سابق ایم این اے کو14روزہ ریمانڈپر جیل بھجوانے کاحکم دیا،جس کے ساتھ ہی ملزم کے وکیل نے ضمانت کی درخواست جمع کرائی جس پرعدالت نے50،50ہزار کے دومچلکوں پر ان کی ضمانت منظور کر لی۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے لیاقت بھٹی کے وکیل نے کہا کہ ان کے موکل کے خلاف جرم ثابت نہیں ہو سکا۔ پولیس حکام کے مطابق لڑکی کے ورثاءکی درخواست پر کارروائی گئی تھی۔

مزید : قومی /اہم خبریں