ایران عرب ریاستوں کے داخلی امور میں مداخلت سے باز رہے توتعاون بڑھا سکتے ہیں،سعودی سفیر

ایران عرب ریاستوں کے داخلی امور میں مداخلت سے باز رہے توتعاون بڑھا سکتے ...

  

نیویارک /ریاض(ثناءنیوز)اقوام متحدہ میں متعین سعودی سفیرعبداللہ المعلمی نے کہا ہے کہ اگرایران عرب ریاستوں کے داخلی امور میں مداخلت ختم کردے توسعودی عرب اس کے ساتھ تعاون بڑھانے کے لیے تیار ہوگا۔عرب ٹی وی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ''اگر خطے میں ایران کوئی مثبت کردار ادا کرتا ہے اور عرب ممالک کے داخلی امور میں کوئی مداخلت نہیں کرتا ہے تو پھر اس کو خوش آمدید کہا جائے گا''۔واضح رہے کہ ایران اور سعودی عرب کے درمیان حال ہی میں سفارتی روابط میں تیزی آئی یے اور ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف جلد ہی سعودی عرب کا دورہ کرنے والے ہیں۔گزشتہ سال میں اعتدال پسند ایرانی صدر حسن روحانی کے انتخاب اور اقتدار سنبھالنے کے بعد کسی اعلیٰ ایرانی عہدے دار کا سعودی عرب کا یہ پہلا دورہ تھا۔

حسن روحانی نے برسر اقتدار آنے کے بعد خلیج تعاون کونسل جی سی سی کے رکن ممالک کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔ایران اور سعودی عرب کے عراق اور شام میں جاری خانہ جنگیوں،لبنان ،یمن اور بحرین میں سیاسی بحرانوں کے حوالے سے بھی اختلافات پائے جاتے ہیں لیکن دونوں ممالک سخت گیر جنگجو گروپوں کی عراق اور شام میں تیز رفتار پیش قدمی کو روکنے میں متفق نظر آتے ہیں اور ان دونوں نے سابق عراقی وزیراعظم نوری المالکی کی رخصتی کا بھی خیرمقدم کیا تھا۔سعودی عرب نے قبل ازیں ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف کو دورے کی دعوت دی تھی اور ایران نے اس کا خیرمقدم کیا تھا لیکن اس دورے کی ابھی تک نوبت نہیں آئی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -