کراچی سٹاک مارکیٹ مجموعی طور پر شدید ترین مندے کی زد میں رہی

کراچی سٹاک مارکیٹ مجموعی طور پر شدید ترین مندے کی زد میں رہی

  

کراچی (آن لائن) کراچی اسٹاک مارکیٹ گزشتہ ہفتہ مجموعی طور پر شدید ترین مندی کی زد میں رہی‘ کاروباری ہفتہ کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس 3 نفسیاتی حدوں کو کھو بیٹھا اور 28500 کی سطح پر بند ہوا جبکہ مندی کے سبب گزشتہ ہفتہ مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 133ارب سے زائد روپے ڈوب گئے۔ اسلام آباد کے ریڈ زون میں انقلاب اور آزادی مارچ کے قائدین کی ڈیڈ لائن پر ڈیڈ لائن سے سرمایہ کار پورے ہفتہ تذبذب کا شکار دکھائی دیئے اور انہوں نے کوئی نئی پوزیشن لینے سے گریز کیا۔ بڑے سرمایہ کار سیاسی افق پر غیر یقینی صورتحال اور کسی ممکنہ منفی خدشات کے پیش نظر مارکیٹ سے سائیڈ لائن رہے جبکہ غیر ملکی سرمایہ کاروں کی جانب سے سرمائے کا انخلاءمقامی سطح پر پرافٹ ٹیکنگ کی خاطر فروخت کا دباﺅ بھی دیکھا گیا۔ گزشتہ ہفتہ پانچ کاروباری دنوں میں سے 4 دن مارکیٹ مندی کی زد میں رہی جبکہ آخری روز دھرنے والوں اور فوج کے درمیان ثالثی یا سہولت کار کی خبروں نے سیاسی معاملات حل ہوتا دیکھ کر سرمایہ کاروں کو ایک بار پھر متحرک کردیا جس کے باعث صرف جمعہ کو 100انڈیکس میں تقریباً 800پوائنٹ کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا اور100انڈیکس 28800پوائنٹ کی سطح دوبارہ عبور کرتا ہوا ساڑھے 28ہزار پوائنٹ کی سطح سے تجاوز کرگیا۔ ہفتہ وار رپورٹ میں اس بات کا بھی انکشاف ہوا کہ گزشتہ کاروباری ہفتہ کیپٹل مارکیٹ کے لئے مایوس کن ثابت ہوا۔

سرمایہ کاروں کے مطابق مارکیٹ میں کوئی نیا ٹریگر بھی نہیں تھاکہ جس کی امید پر سرمایہ کار راغب ہوتے جبکہ دھرنے کے حوالے سے روز بروز بدلتی صورتحال نے مارکیٹ کا بھٹہ بٹھا نے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ مارکیٹ کوبحران سے بچانے کیلئے حکومتی اداروں نے بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کی تاہم اس کے بھی کوئی خاطر خواہ نتائج نہ نکل سکے۔ گزشتہ کاروباری ہفتہ کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 304.01پوائنٹ کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے 100انڈیکس 28871.75پوائنٹ سے کم ہوکر 28567.74پوائنٹ پر بند ہوااسی طرح 259.42پوائنٹ کی کمی سے کے ایس ای 30انڈیکس 20137.30پوائنٹ سے گھٹ کر 19877.88پوائنٹ اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 21118.33پوائنٹ سے کم ہوکر 21014.45پوائنٹ پر آگیا۔ کاروباری اتار چڑھاﺅ کے بعد مندی کے نتیجے میں مارکیٹ کے سرمائے میں 33ارب 51کروڑ 17لاکھ 78ہزار 391روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 67کھرب 60ارب 44کروڑ 6لاکھ 12ہزار 959روپے سے کم ہوکر 67کھرب 26ارب 92کروڑ 88لاکھ 34ہزار 568روپے ہوگیا۔ گزشتہ کاروباری ہفتہ کے دوران شدید مندی سے سرمائے کا مجموعی حجم 65کھرب روپے کی کم ترین سطح پر بھی آگیا تھا۔ کراچی اسٹاک مارکیٹ کی ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتہ کم سے کم کاروباری لین دین 7کروڑ 64لاکھ جبکہ زیادہ سے زیادہ 18کرور 78لاکھ حصص ریکارڈ ہوا جبکہ ٹریڈنگ ویلیو 3ارب سے 9ارب روپے کے درمیان محدود رہا۔ گزشتہ ہفتہ کے دوران کراچی اسٹاک مارکیٹ میں مجموعی طور پر 1668کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 644کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 919میں کمی اور 105کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ کاروبار کے لحاظ سے کے الیکٹرک‘ بینک آف پنجاب‘ لافارج پاک‘ پاک الیکٹرون‘ میپل لیف سیمنٹ‘ آدمجی انشورنس اور فوجی فرٹیلائزر سرفہرست رہے۔

 

مزید :

کامرس -