طب کی ترقی کیلئے ایکٹ2012کی ترقی کیلئے نظر ثانی کی جائے،حکیم عمران فیاض

طب کی ترقی کیلئے ایکٹ2012کی ترقی کیلئے نظر ثانی کی جائے،حکیم عمران فیاض

  

لاہور(پ ر) ملک و قوم کے وسیع تر مفاد میں طب کی ترقی’’ صحت کی سہولیات سب کے لئے‘‘ نعرہ کو شرمندہ تعبیر کرنے اور خالصتاًعوامی فلاح کی خاطر DRAP Act 2012 اور اس کے تحت تشکیل دیئے گئے Enlistment Rules پر نظر ثانی کی جائے ورنہ ایک ہزار طبی وہومیودوا ساز ادارے اور لاکھوں افراد بے روز گار ہو جائینگے کیونکہ ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی پاکستان کی جانب سے (DRAP ) انلسٹمنٹ رولز کا اجراء زمینی حقائق کے منافی ہے ان خیالات کا اظہار پاکستان طبی کانفرنس لاہور ڈویژن کے سیکرٹری اطلاعات پروفیسر حکیم سید عمران فیاض اور پروفیسر حکیم محمد افضل میو نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ یہ بات تسلیم شدہ ہے کہ پاکستان کی 70فیصد آبادی یعنی چودہ کروڑ عوام روایتی طریقہ ء علاج سے استفادہ کرتی ہے ۔انہوں نے کہاکہ سابقہ حکومت نے جلد بازی مخصوص مفادات اور سیاسی دباؤ پر آخری ایام میں DRAP 2012 منظور کروا کر لاگو کیا جوکہ طبی دوا ساز اداروں اور ان کے لاکھوں ملازموں کا معاشی قتل ہے انہوں نے صدر ممنون حسین اور وزیر اعظم میاں نواز شریف سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی حکومت کے خلاف ہونے والی سازش کا خصوصی طور پر نوٹس لیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -