میٹرو پولیٹن کارپوریشن کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی ، ممبران دست و گریباں 22قرار دادیں منظور

میٹرو پولیٹن کارپوریشن کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی ، ممبران دست و گریباں ...

لاہور (جنر ل ر پو رٹر ) میٹروپولیٹن کارپوریشن لاہورکے اجلا س میں ہنگامہ آرائی ،ممبران دست و گریبان،شدید نعرے بازی میں ایوان نے 22 قراردایں منظور کرالیں، ممبرا ن نے بعض ڈپٹی مئیرز کے خلا ف شکا یا ت کے انبار لگا د ئیے ،جبکہ بعض نے ڈپٹی میئرزپر کرو ڑو ں رو پے کے فنڈز خرچ کر نے کا حساب نہ لینے پر سپیکر کا گھیراؤ بھی کیا ، بتا یا گیا ہے کہ گزشتہ روز میٹروپولیٹن کارپوریشن لاہور کا 9 واں ہاؤس اجلاس بھی مچھلی منڈی بن گیا، لیگی ممبرز نے اسپیکر کا گھیراؤ کیا۔ تنقیدی توپوں کا رخ ڈپٹی میئرز کی جانب رہا،۔تفصیلات کے مطابق اسپیکر میٹروپولیٹن کارپوریشن میاں محمد طارق کی زیر صدارت ہاؤس اجلاس شروع ہوتے ہی ڈپٹی میئر رانا اعجاز احمد حفیظ نے کھادر ایریا سے مکانات کی تعمیر پر نقشہ فیس وصول کرنے اور یونین کونسلز میں سرکاری ٹیلی فون کی سہولت مہیا کرنے کی قرارداد پیش کی تو غلام حسین بھٹی، رانابابر، چودھری عبدالغفور، رائے لیاقت اور دیگر نے نامنظور کی صدا بلند کی، خوب شور شرابا ہوا تو ایوان مچھلی منڈی کی تصویر پیش کرنے لگا شور شرابے کے باعث کارروائی بھی رْک گئی۔سراپا احتجاج ممبرز نے الزام عائد کیاکہ انکی یونین کونسلز سیوریج سمیت دیگر مسائل کا شکار ہیں لیکن میئر اور ڈپٹی میئرز بات سننے کو تیار نہیں، بتایا جائے کہ تین کروڑ کے فنڈز کہاں خرچ ہوئے ہیں؟ سیوریج مسائل نے زندگی اجیرن کر رکھی ہے۔20 منٹ تک اجلاس کی کارروائی رکنے کے بعد شروع ہوئی تو اسلم بٹ نے شاد باغ کے چوک ناخدا کا نام تبدیل کر کے صدیق اکبر چوک رکھنے کی قرارداد پیش کی، مقصود گجر نے کہاکہ ڈپٹی میئرز بھی پسند ناپسند کی بنیاد پر سٹریٹ لائٹس دے رہے ہیں، حاجی ملک ریاض نے غیرمعیاری اشیاء تیار کرنے والی فیکٹریوں، کھلونا پستول پر پابندی لگانے جبکہ گلستان کالونی میں پبلک ٹائلٹس کی سہولت فراہم کرنے کی قرارداد دادیں پیش کیں۔رائے لیاقت نے مزدوروں کی آواز اور مزدوروں کے لیے شیلٹرزکی تعمیر کی قرارداد پیش کی۔اجلاس میں گزشتہ اجلاس کی کارروائی کی توثیق کی گئی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1