اوور سیز پاکستانی نے لاہور ہائیکورٹ پہنچ کر اپنے 5بچے فروخت کے لئے پیش کر دیئے

اوور سیز پاکستانی نے لاہور ہائیکورٹ پہنچ کر اپنے 5بچے فروخت کے لئے پیش کر ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )اراضی کا قبضہ واگزار نہ ہونے پراوور سیز پاکستانی نے لاہور ہائیکورٹ پہنچ کراپنے 5بچے فروخت کے لئے پیش کردئیے۔ قبضہ مافیا سے تنگ گجرات کے رہائشی اوورسیز پاکستانی ناصر احمد اعوان اپنے پانچوں بیٹوں کے ہمراہ لاہور ہائیکورٹ آیااور عدالتی احاطے میں بچوں کو فروخت کرنے کی پیش کش کرتا رہا، متاثرہ شہری نے کہا کہ 17برس سے زمین کا قبضہ واگزار ہوا نہ ہی اس کے کیس کا فیصلہ ہوا،شہری نے مزید کہا کہ اوورسیز پاکستانی ہوں مگر 17برس سے انصاف نہیں ملاہے،قانونی جنگ لڑ کر اس کے پاس جمع پونجی ختم ہو گئی ہے ،اب بچوں کو کھانا کھلانے کے پیسے بھی نہیں ،اسی لئے بچوں کو فروخت کرنے نکلا ہوں، سبزی منڈی گجرات کے قریب جگہ کا قبضہ واپس نہ ملا تو خودکشی پر مجبور ہو جاؤں گا،متاثرہ شہری کے سب سے بڑے بیٹے عبدالرحمن کی عمر 15سال اور عمار نامی سب سے چھوٹے بیٹے کی عمر 5سال ہے ،متاثرہ شہری نے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سے اپیل کی ہے کہ اسے انصاف فراہم کیا جائے۔

بچے فروخت

مزید : علاقائی