نیب بارے سپریم کورٹ کے ریمارکس چشم کشا‘ عوام کا اعتماد اٹھ چکا ہے‘ جاوید قصوری

نیب بارے سپریم کورٹ کے ریمارکس چشم کشا‘ عوام کا اعتماد اٹھ چکا ہے‘ جاوید ...

ملتان (سٹی رپورٹر)قائم مقام امیرجماعت اسلامی پنجاب محمدجاوید قصوری نے کہاہے کہ نیب کے حوالے سے سپریم کورٹ کے ریمارکس چشم کشا ہیں۔نیب کے ادارے پر عوام کا اعتماد اٹھ چکا ہے۔اس ادارے میں سیاسی بنیادوں پر کی جانے والی بھرتیاں اور پھرکٹھ پتلی افسران کی کارستانیوں (بقیہ نمبر7صفحہ12پر )

نے نیب کا وقار مجروح کرکے رکھ دیا ہے۔قومی احتساب بیوروسیاسی دباؤ اور پلی بارگین کی سہولت فراہم کرنے والاایک ادارہ بن کے رہ گیا ہے۔روایتی طریقوں کا سہارا لیتے ہوئے کرپشن کرنیوالوں کے خلاف تاخیری حربے اور کمزور تفتیش کے ذریعے مجرمان جیل کی سلاخوں کی بجائے آزاددندناتے پھرتے ہیں۔قومی خزانے کو اربوں کھربوں کانقصان پہنچانے والے ڈاکٹر عاصم حسین کو بیرون ملک جانے دینے کی اجازت ناقابل فہم ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں کرپشن کی انتہا ہوچکی ہے۔منافع بخش ادارے قومی خزانے پر بوجھ بن چکے ہیں۔لوگوں کو دووقت کی باعزت روٹی بھی دستیاب نہیں۔لاقانونیت کی انتہاہوچکی ہے۔حکمرانوں کی غیر سنجیدگی کے باعث عوام کی پریشانی میں اضافہ ہوجاتا جارہا ہے۔یوں محسوس ہوتاہے کہ موجودہ حکمرانو ں کاعوامی فلاح وبہبود کے حوالے سے کوئی وژن اور پروگرام نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت نے ایف بی آر،اسٹیل مل،پی آئی اے،ریلوے،پولیس سمیت دیگر سرکاری اداروں میں غیر قانونی بھرتیاں کرکے رشوت کابازار گرم کررکھا ہے۔جائز کاموں کے لیے بھی رشوت دینی پڑتی ہے۔نیب جس کاکام ملک سے کرپشن کاخاتمہ اور کرپٹ عناصر کاقلع قمع کرنا تھا،بدقسمتی سے خوداس ادارے میں کرپشن کی داستانیں سنائی دیتی ہیں۔حکمرانوں کوکوئی ایماندار افسراس ادارے کی سربراہی کے لیے دستیاب نہیں ہے۔محمدجاوید قصوری نے مزیدکہاکہ نوازشریف کے بعد آصف علی زرداری جنرل (ر)پرویزمشرف اور دیگر کرپٹ افراد کے خلاف بھی سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جانی چاہئے۔ملک میں احتساب کاعمل شروع کرکے ہی ہم دنیا میں ایک باوقار،باعزت اور محفوظ معاشرے کی تشکیل کرسکتے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر