تخت بھائی میں رات کو گاڑیاں لوٹنے والے رہزنوں کا چار رکنی گروہ گرفتار

تخت بھائی میں رات کو گاڑیاں لوٹنے والے رہزنوں کا چار رکنی گروہ گرفتار

شیر گڑھ(نامہ نگار) تخت بھائی میں رات کو گاڑیاں لوٹنے والے رہزنوں کا چار رکنی گروہ گرفتار قانون کے محافظ ہی رہزن نکلے لوٹی ہوئی رقم،موبائیل فون اور تین پستول بر آمد اے ایس پی تخت بھائی کیپٹن(ر) علی بن طارق نے ایس ایچ او تخت بھائی ریاض خا ن کے ہمراہ تھانہ تخت بھائی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایک مہینہ پہلے تھانہ تخت بھائی کے حدود فضل اباد روڈ پر ڈی تھری ہوٹل کے قریب رات 10 بجے کے قریب پشاور سے آنیوالی فلائنگ کوچ اور ایک موٹر کار کو نا معلوم ملزمان نے زبردستی روک کر اسلحے کی نوک پر مسافروں سے نقدی اور موبائیل فون چھین کر فرار ہو گئے تھے جبکہ اسی طرح تین وارداتیں تھانہ ساڑو شاہ کی حدود میں بھی ہوئی تھی جہاں پولیس پر فائرنگ بھی ہوئی تھی ڈی پی او مردان ڈاکٹر میاں محمد سعید کی خصوصی ہدایت پر ایس ایچ او تخت بھائی ریاض خان کی قیادت میں ایک سپیشل ٹیم تشکیل دیا جنہوں جدید سائنسی خطوط پر تفتیش شروع کی اور چالیس کے قریب مشتبہ افراد کو حراست میں لیا تفتیش کے دوران پشاور میں تعینات ایلیٹ پولیس اہلکار عدنان ولد فضل دیان سکنہ ٹکر، مردان کچہری میں تعینات کانسٹیبل فرہاد علی ولد شمشیر سکنہ ٹکر ،فواد ولد شیر افضل اور جمیل ولد معروف ساکنان ٹکر نے اعتراف جرم کرلیا جن کے قبضے سے 69ہزار روپے نقد،9عدد موبائیل فون اور تین عدد پستول بر آمد کئے گئے جبکہ ان کا ایک ساتھی نیک محمد روپوش ہے جن کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارے جاتے ہیں انہوں نے کہا کہ پولیس اہلکار دن کو سرکاری ڈیوٹی کرتے تھے اور رات کو رہزنی کرتے تھے اگر کبھی ناکے پر ان سے پستول برآمد ہوتی تو پویس سروس کارڈ دکھاکر نکل جاتا تھا انہوں نے کہا کہ یہ سب کچھ عوام کے تعاون سے ممکن ہوئی اگر عوام تعاون کرے تو کوئی مجرم قانون کی گرفت سے بچ نہیں سکتا اور علاقہ امن کا گہوارہ بن سکتا ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر