ادلب میں جنگ کے دوران کیمیائی ہتھیا ر استعمال کئے جا سکتے ہیں:اقوام متحدہ نے بد ترین خدشہ ظاہر کردیا

ادلب میں جنگ کے دوران کیمیائی ہتھیا ر استعمال کئے جا سکتے ہیں:اقوام متحدہ نے ...
ادلب میں جنگ کے دوران کیمیائی ہتھیا ر استعمال کئے جا سکتے ہیں:اقوام متحدہ نے بد ترین خدشہ ظاہر کردیا

  

نیویارک (ڈیلی پاکستان آن لائن) اقوام متحدہ کی جانب سے اس خدشے کا اظہار کیاگیاہے کہ شام کے علاقے ادلب میں شامی فوج اور اپوزیشن کے درمیان جنگ میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال خارج از امکان نہیں ہے ۔

غیر ملکی نیوز ایجنسی کے مطابق اقوام متحدہ نے خدشہ ظاہر کیاہے کہ شامی صوبے ادلب میں لڑائی کی صورت میں حکومتی فورسز اور باغی، دونوں کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال ممکن ہے۔ جنیوا میں جمعرات کو بات کرتے ہوئے شام کے لیے خصوصی مندوب اسٹیفان ڈے مستورا نے کہا کہ ادلب میں غیر ملکی جنگجوو¿ں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے جبکہ اندازہ لگایا گیا ہے کہ قریب دس ہزار دہشت گرد بھی وہاں سرگرم ہیں۔ انہوں نے روس، ایران اور ترکی سے کہا کہ وہ ادلب پر دمشق فورسز کی چڑھائی میں تاخیر کی کوشش کریں تاکہ شہریوں کو وہاں سے محفوظ مقامات پر منتقل ہونے کا موقع مل سکے اور عام شہریوں اور بچوں کو جنگ کا ایندھن بننے سے بچایا جا سکے ۔

مزید :

بین الاقوامی -