آزادی رائے کے نام پررسول ؐکی شان میں گستاخی برداشت نہیں کی جاسکتی، عبدالحنان

آزادی رائے کے نام پررسول ؐکی شان میں گستاخی برداشت نہیں کی جاسکتی، عبدالحنان

  

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) المحمدیہ سٹوڈنٹس پاکستان کے مسؤل عبدالحنان خالد نے ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ناموس رسالت کا تحفظ ہماری ایمانی ذمہ دارای ہے۔آزادی رائے کے نام پر اللہ کے نبی ﷺ کی شان میں گستاخی کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ او آئی سی کی طرف سے ناموس رسالت کے تحفظ کی خاطر عملی اقدامات کی ضرورت ہے۔حکومت پاکستان او آئی سی کا اجلاس جلد از جلد طلب کرے اور ہالینڈ میں ہونے والے اس گستاخانہ مقابلے کے خلاف مشترکہ حکمت عملی اپنائے۔

اپنے جاری کردہ بیان میں مسؤل المحمدیہ سٹوڈنٹس پاکستان عبدالحنان خالد کا مزید کہنا تھا کہ ہالینڈ کے پارلیمانی اپوزیشن لیڈر کی طرف رسول اللہ ﷺ کی شان میں گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کے اعلان پر جتنی مذمت کی جائے ، وہ کم ہے۔ آزادی رائے اور شدت پسندی میں فرق رکھنا ضروری ہے۔ آزادی رائے کے نام پر گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ ناقابل قبول ہے جس کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جاسکتا۔ناموس رسالت کا تحفظ ہماری ایمانی غیرت کا حصہ ہے جس کے لیے ہمارا سب کچھ حاضر ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم پاکستانی حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کی منسوخی تک ہالینڈ سے سفارتی تعلقات منقطع کئے جائیں اور اس معاملے پر او آئی سی کا اجلاس بلایا جائے۔ جس میں ہالینڈ کے خلاف مشترکہ حکمت عملی اختیار کی جائے۔انھوں نے مزید کہا کہ اسلامی ممالک کی تنظیم کی طرف سے مذمت کے ساتھ ساتھ عملی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے تاکہ نبی اکرم ﷺکی شان میں گستاخی کرنے والوں کو سخت پیغام دیاجا سکے۔ مسؤل المحمدیہ سٹوڈنٹس پاکستان عبدالحنان خالد کا مزید کہنا تھا کہ المحمدیہ سٹوڈنٹس مسلم ممالک اور عالمی تنظیموں تک اپنی آواز پہنچانے کیلئے ملک بھر میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف احتجاج کر رہی ہے اور اس مقابلے کی منسوخی تک اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -