احتجاج رنگ لے آیا، ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کو مقابلہ منسوخ، یہ مسلم امہ کی اخلاقی فتح ہے ، شاہ محمود تحریک لبیک کا دھرنا ختم کرنے کا اعلان

احتجاج رنگ لے آیا، ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کو مقابلہ منسوخ، یہ مسلم امہ کی ...

  

ایمسٹرڈم (مانیٹرنگ ڈیسک ، سٹاف رپورٹر)پاکستان سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کیخلاف احتجاج کے بعدڈچ حکومت نے ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ کردیاہے اور اس حوالے سے حکومت کی جانب سے تحریری حکم نامہ جاری کردیاگیاہے۔ وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے یہ خوش خبری تحریک لبیک کے احتجاجی مارچ کے شرکاء کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں سنائی ، بعدازاں تصدیق کے بعد تحریک لبیک پاکستان نے بھی وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں احتجاجی دھرنا ختم کرنے کا اعلان کر دیا۔ امریکی نیوز ایجنسی کے مطابق ہالینڈ کے پارلیمنٹرینز نے گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ کردیاہے اور اس حوالے سے حکومت کی جانب تحریری حکم نامہ بھی جاری کردیا گیاہے۔ نیوز ایجنسی کے مطابق ڈچ حکومت کی جانب سے یہ حکم مسلمانوں کی شدید احتجاج کے باعث جاری کیا گیاہے۔واضح رہے کہ تحریک لبیک سربراہ علامہ خادم حسین رضوی کی جانب سے ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف ہزاروں فرزندان اسلام پر مشتمل لانگ مارچ اسلام آباد کی طرف جاری ہے جو اس وقت راولپنڈی پہنچ چکاہے۔ علامہ خادم حسین رضوی کا مطالبہ ہے کہ گستاخانہ خاکوں کی اشاعت پر ڈچ سفیر کو ملک بدر کرکے پاکستانی سفیر کو واپس بلایا جائے اس سے پہلیہالینڈ کے سیاستدان اور رکن پارلیمینٹ گیرٹ ولڈرز نے بھی گستانہ خاکوں کے متنازع مقابلے کو منسوخ کرنے کا اعلان کردیا ۔ہالینڈ کی اسلام مخالف جماعت فریڈم پارٹی ٓآف ڈچ کے رہنما گیرٹ ویلڈرز نے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرنے کے لیے پیغمبراسلام کے گستانہ خاکے بنانے کے متنازع مقابلے کا اعلان کیا تھا۔اسلام مخالف جماعت کے رہنما نے اس منافرت انگیز مہم کے لیے 3سال قبل اسی طرز کا مقابلہ جیتنے والے امریکی کارٹونسٹ کو جج مقرر کرنے کا اعلان کیا۔اس اعلان کے بعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں شدید احتجاج کیا گیا تھا اور تحریک لبیک پاکستان کا اس سلسلے میں لاہور سے اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ بھی جاری ہے۔تاہم پاکستان سمیت دنیا بھر سے مسلمانوں کا شدید ردعمل سامنے آنے کے بعد ان مقابلوں کو منسوخ کرنے کا اعلان کردیا گیا ہے۔ہالینڈ کے اسلام مخالف قانون دان گیرٹ ولڈرز جمعرات کی رات جاری ایک تحریری بیان میں کہا کہ دیگر افراد کی زندگیوں کو لاحق خطروں اور قتل کی دھمکیوں کے بعد وہ گستانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ کرنے کا اعلان کرتے ہیں۔ان مقابلوں کے اعلان کے انعقاد کے اعلان کے بعد مسلمانوں کے سخت ردعمل کو دیکھتے ہوئے ہالینڈ کے وزیر اعظم نے گستاخانہ خاکوں کے مقابلے سے اپنی حکومت کو الگ کر لیا تھا۔ہالینڈ کے وزیر اعظم مارک روٹے نے ہفتہ وار پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ 'گیرٹ ولڈرز حکومت کے رکن نہیں اور نہ ہی یہ مقابلہ حکومت کا فیصلہ ہے۔'پاکستان نے ہر سطح پر اس معاملے کے خلاف احتجاج کیا اور اسلامی سربراہی کانفرنس بلا کر تمام مسلمان ممالک کی جانب سے اقوام متحدہ کے فورم پر اس قبیح فعل کے خلاف آواز اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔پاکستان کی قومی اسمبلی کے ساتھ ساتھ صوبائی اسمبلیوں سے بھی گستاخانہ خاکوں کے خلاف قرارداد پاس کی گئی تھی اور مختلف شہروں میں احتجاج بھی کیا گیا تھا۔دوسری جانب مذہبی و سیاسی جماعت تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) نے متنازع مقابلے کے خلاف گزشتہ روز لانگ مارچ کا آغاز کیا تھا اور حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ پاکستان میں تعینات ڈچ سفیر کو ملک بدر کرے۔راولپنڈی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہالینڈ کے پاکستان میں سفیر نے بتایا کہ گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ ترک کردیا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں سے مسلمانوں میں اضطراب پیدا ہوا، ہم نے ڈچ وزیر خارجہ سے پاکستانی عوام کے جذبات کا اظہار کیا۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ تحریک لبیک نے گستاخانہ خاکوں پر اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا، اللہ کا کرم ہوگیا کہ معاملہ ٹل گیا اب درخواست ہے کہ احتجاجی قافلہ پر امن طور پرمنشتر ہوجائے۔اس سے قبل ایک ویڈیو پیغام میں وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ گستاخانہ خاکوں کے مسئلے پر اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے ذریعے اقوام متحدہ میں بات کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کا مسئلہ ہر مسلمان کا مسئلہ ہے، نبی صلی اللہ علیہ وسلم مسلمانوں کے دل میں رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جب کوئی نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی شان میں گستاخی کرتا ہے تو تمام مسلمانوں کو تکلیف ہوتی ہے۔عمران خان نے کہا کہ مسئلہ یہ ہے کہ مغرب کے لوگوں کو اس چیز کی سمجھ نہیں ہے کیوں کہ ہم مسلمانوں نے ان کوسمجھایا نہیں۔انہوں نے کہا کہ جس طرح مغرب کے لوگ دین کو دیکھتے ہیں وہ بالکل مختلف ہے۔بعدازاں ڈچ حکومت کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کا عالمی مقابلہ موخر کئے جانے کے فیصلے کے بعد تحریک لبیک نے اسلام آباد میں دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔دنیا نیوز کے مطابق ڈچ حکومت کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کا مقابلہ منسوخ کئے جانے کے بعد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور تحریک لبیک کے رہنما?ں کی مشترکہ پریس کانفرنس کے بعد تحریک لبیک نے اسلام آباد میں دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا اور تحریک کے کارکن قافلوں کی صورت میں پر امن طور پر اپنے اپنے شہروں کی طرف روانہ ہوگئے۔واضح رہے کہ پریس کانفرنس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے تحریک لبیک کے رہنما?ں سے ان کا مقصد پورا ہوجانے کے بعد دھرنا ختم کرنے کی اپیل کی تھی۔

مزید :

صفحہ اول -