ضلع کونسل دیر پائیں کا7ارب روپے سے زائد کا بجٹ پیش

ضلع کونسل دیر پائیں کا7ارب روپے سے زائد کا بجٹ پیش

  

جندول نمائندہ ()ضلعی کونسل دیر پائین نے 2018-19کیلئے 7ارب61کروڑ 31لاکھ27ہزار روپے کا خطیر بجٹ پیش کر دیا ۔ ضلعی ناظم محمد رسول خان نے نائب ناظم عبد الرشید کی سربراہی میں ضلعی کونسل بلامبٹ میں سالانہ بجٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ ضلعی کونسل نے ترقیاتی منصوبوں کیلئے 27کروڑ 86لاکھ روپے مختص کر رکھے ہیں جبکہ غیر ترقیاتی منصوبوں میں 6ارب95کروڑ 89لاکھ روپے تنخواہوں ، 43کروڑ 19لاکھ 68ہزارسکولوں کی حالت بہتر بنانے ، 27کروڑ 11لاکھ96ہزار دیگر ضروریات ، 1کروڑ 71لاکھ 55ہزار سرکاری ہسپتالوں میں ایمرجنسی ادویات اس طرح ترقیاتی بجٹ کے مد میں 27کروڑ 86لاکھ روپے اور فنانس منسٹر ڈائریکٹیو کے مد میں 20کروڑ 10ہزار روپے پیش کی گئی ۔ بجٹ اجلاس کے دوران منتخب ضلعی کونسلران، ڈپٹی کمشنر لوئر دیر سرمد سلیم اکرم اور دیگر تمام سرکاری محکموں کے افسران بھی موجود تھے ۔ اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے سپیکر عبد الرشید نے بجٹ کے حوالہ سے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ اجلاس آئندہ چار دنوں تک مسلسل جاری رہے گا اور اس دوران منتخب کونسلران بجٹ پر بحث کرتے ہوئے اپنے اعتراضات پیش کرینگے اور چار روز بحث کے بعد نتیجہ تک پہنچنے کے بعد کونسل سے بجٹ منظور کرایا جائے گا ۔ اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی وا ضلع کونسلر صاحبزادہ رفع اللہ جان،ضلع کونسلر حاجی رحیم شاد پاچہ،نظیراحمداور مولانا محمد عمران الجندولی نے کہا کہ تحصیل ثمرباغ میں پانی کی قلت ختم کرنے ، تعلیمی اداروں کو سہولیات سے آراستہ کرنے ، بجلی نظام بہتر بنانے اور پختگی کوچہ جات وغیرہ کیلئے خطیر رقم کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ تحصیل ثمرباغ پاک افغان بارڈر پر موجود حساس علاقہ ہے اس لئے یہاں کے ہسپتال کو بھی ہر قسم کے سہولیات سے آراستہ کرنا ہوگا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -