آرمی چیف کو جنوبی وزیرستان آمدپر خوش آمدید کہتے ہیں،مولانا جمال

آرمی چیف کو جنوبی وزیرستان آمدپر خوش آمدید کہتے ہیں،مولانا جمال

  

ٹانک (نمائندہ خصوصی)جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے ایم ایم اے کے ایم این اے مولانا جمال الدین نے اخباری بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ہم آرمی چیف قمر جاوید باجوہ کو سر زمین جنوبی وزیرستان آمدپر خوش امدید کہتے ہیں اور شکر گزار ہیں کہ ارمی چیف کا یہ تیسرا دورہ ہے کہ وہ جنوبی وزیرستان آکر ہمارے مسائل حل کرنے کی کوشش کرتے ہیں لیکن دوسری طرف مجھے انتظار تھا کہ شاید ایک عوامی نمائندہ کے ناطے مجھے یہ شرف حاصل ہو تاکہ میں اپنے عوام کی نمائندگی ارمی چیف کے پروگرام میں کرتا کیونکہ جنوبی وزیرستان میں کئی دھماکوں میں 76 کے قریب بچے اور جوان زخمی اور شہید ہوئے ہیں جوکہ ابھی تک امداد محروم چلے آرہاہے آپریشن راہ نجات کے دوران جنوبی وزیرستان کہ ہزاروں کے تعداد میں گھر تباہ ہوئے ہیں جو رہنے کے قابل نہیں عوام سروے کے لئے دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں ایک سال قبل جو سروے ہوئے تھے اس کے چیک ابھی تک نہیں ائے اور تو اور وہ ایک امید تھی فیض تھری کی سولہ ہزار سروے وہ کینسل کر دئیے گئے ہیں جو محسود قوم کے ساتھ سراسر زیادتی ہیں انہوں نے کہا کہ ہم اس بات پر متفیق ہیں کہ جنوبی وزیرستان میں ترقیاتی کام پاک ارمی کے مرحو ن محنت ہیں لیکن وزیرستان کے کئی ایسے گاوں ہیں کہ وہاں 20 کلومیٹر تک لوگ پیدل سفر کرتے ہیں سکول نہیں ہسپتال نہیں یہاں تک ایسے علاقے بھی ہیں کہ وہاں ابھی تک متاثرین کی واپسی بھی نہیں ہوئی جس میں سمل اوربوبڑ شامل ہیں مولانا جمال الدین کا کہنا تھا کہ جنوبی وزیرستان کا انضمام ہو تو گیا ہے لیکن ثمرات ابھی تک نظر نہیں ار ہے ہیں جس کی وجہ سے قبائلیوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -