ادویات چوری کیس ساز باز کے بعد کھڑے لگانے کا انکشاف

ادویات چوری کیس ساز باز کے بعد کھڑے لگانے کا انکشاف

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) سابق سرکل آفیسر اینٹی کرپشن نے کروڑوں رکی گمشدہ سرکاری ادویات کاکیس ملی بھگت سے ٹھکانے لگادیامحکمہ ہیلتھ میں سرکاری ادویات جن میں انجکشن، کپیسول، گولیاں، سرنجز سمیت69 آٹیم شامل تھے اور(بقیہ نمبر25صفحہ12پر )

جن کی مالیت کروڑوں روپے بتائی جاتی ہے سٹورسے غائب پائے گئے‘ ڈرگ انسپکٹراورسٹورکیپئر ناصرمحمودنے2 اپریل2007 کوان ادویات کے غائب ہونے کی رپورٹ دی اورمبینہ طورپراخلاق احمدنامی سٹورکیپئر کوملوث ظاہرکیامحکمہ صحت اس چوری کاسراغ لگانے میں ناکام رہا جس پراینٹی کرپشن کوکاروائی کالکھاگیا اینٹی کرپشن نے17/15 مقدمہ نمبرکے تحت ادویات کی چوری کامقدمہ درج کیالیکن بعدازاں سرکل آفیسراینٹی کرپشن راناکلیم احمدنے اس مقدمہ میں ساز بازکرلی اوربغیرکسی برآمدگی کے یہ مقدمہ بھاری رقم لے کرداخل دفترکردیا اس طرح10 سال گزرنے کے باوجود کروڑوں کی ادویات اورسرجیکل آٹیم کی چوری کاتاحال پتہ نہیں چل سکاہے شہریوں نے وزیراعلی پنجاب، چیف سیکرٹری، سیکرٹری صحت اوردیگر حکام سے نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔

ادویات چوری کیس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -