حلفیہ کہتا ہوں کسی کے کہنے پر رضوان گوندل کا تبادلہ نہیں کیا : آئی جی پنجاب

حلفیہ کہتا ہوں کسی کے کہنے پر رضوان گوندل کا تبادلہ نہیں کیا : آئی جی پنجاب
حلفیہ کہتا ہوں کسی کے کہنے پر رضوان گوندل کا تبادلہ نہیں کیا : آئی جی پنجاب

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) ڈی پی او پاکپتن رضوان گوندل کے تبادلے کے معاملے پر آئی جی پنجاب کلیم امام نے کہا ہے حلفیہ کہتا ہوں کہ کسی کے کہنے پر تبادلہ نہیں کیا گیا۔

ڈی پی او پاکپتن کے تبادلے کے از خود نوٹس کیس کی سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران آئی جی پنجاب کلیم امام نے اپنے بیان میں ایک خاتون کے ساتھ بد تمیزی کی گئی رضوان گوندل نے حقائق کے خلاف باتیں بتائیں اور درست معلومات نہیں دے رہے۔ تبادلہ سزا نہیں ہوتا مجھ پر تبادلے کیلئے کسی کا کوئی دباﺅ نہیں تھا،رضوان گوندل مجھ سے پوچھے بغیر وزیر اعلیٰ کے پاس گئے حلفیہ کہتا ہوں کہ کسی کے کہنے پر تبادلہ نہیں کیا گیا،جس سے چاہیں میرے بارے میں پوچھ لیں۔

چیف جسٹس نے اونچی آواز میں بات کرنے پر آئی جی پنجاب کلیم امام پر اظہار برہمی کیا اور کہا عدالت میں اونچی آواز میں بات نہ کریں۔ جسٹس عمر عطا بندیال نے آئی جی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا آپ کہہ رہے ہیں کہ کسی سے بھی جا کر پوچھ لیں، یہ کیا طریقہ کار ہے کورٹ کو ایڈریس کرنے کا ، عدالت کو ہدایات نہ دیں۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ خاتون پیدل چل رہی تھی، پولیس نے پوچھ لیا تو کیا برا کیا ؟ جس پر آئی جی کلیم امام نے کہا کہ لڑکی کا ہاتھ پکڑا گیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -