نوجوان لڑکی کے ساتھ 2ماہ تک جنسی زیادتی، درندے برہنہ کرکے مسلسل جسم پر کیا چیز لکھتے رہے؟ دیکھ کر آپ بھی کانپ اٹھیں

نوجوان لڑکی کے ساتھ 2ماہ تک جنسی زیادتی، درندے برہنہ کرکے مسلسل جسم پر کیا ...
نوجوان لڑکی کے ساتھ 2ماہ تک جنسی زیادتی، درندے برہنہ کرکے مسلسل جسم پر کیا چیز لکھتے رہے؟ دیکھ کر آپ بھی کانپ اٹھیں

  

رباط(مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی افریقہ کے ملک مراکش میں ایک لڑکی کو اوباشوں کا ایک گروہ 2 ماہ تک محبوس رکھ کر جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ اس دوران انہوں نے لڑکی کے پورے جسم کو داغ داغ کر ایسی چیزیں لکھ دیں اور تصاویر بنا دیں کہ دیکھ کر آدمی کانپ اٹھے۔ میل آن لائن کے مطابق ان درندوں کی بربریت کا شکار ہونے والی اس 17سالہ لڑکی کا نام خدیجہ اوکارو تھا جسے اغوا ء کاروں نے اغواء کرنے کے بعد ایک گینگ کے ہاتھ فروخت کر دیا۔ اس گینگ کے اراکین دو ماہ تک اسے اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بناتے رہے اور اس کے پورے جسم پر ٹیٹو کی شکل میں کئی الفاظ لکھ دیئے اور برہنہ خواتین کی تصاویر بنا دیں۔ یہ الفاظ اور تصاویر انہوں نے سیگریٹ سے لڑکی کا جسم جلا کر اور ٹیٹو کی سیاہی سے بنائیں۔

رپورٹ کے مطابق دو ماہ تک لڑکی کو بربریت کا نشانہ بنانے کے بعد ملزمان اسے مراکش کے شہر بینی میلال میں واقع اس کے گھر کے قریب بے ہوشی کی حالت میں پھینک کر فرار ہو گئے۔ لڑکی کی ماں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ’جب میں نے اپنی بیٹی کا جسم دیکھا تو میں بے ہوش ہو کر گر گئی۔ اس کے بازو، ٹانگیں، گردن حتیٰ کہ پورا جسم جلا ہوا تھا اور اس پر ٹیٹو بنے ہوئے تھے۔انہوں نے میری بچی کے ساتھ یہ سب کیوں کیا؟ کیا وہ درندے تھے؟ کیا میری بیٹی اس سب کے بعد کبھی دوبارہ اس معمول کی زندگی کی طرف آ سکے گی جو وہ پہلے گزار رہی تھی۔‘‘رپورٹ کے مطابق پولیس نے مقدمہ درج کر کے 1 افراد کو حراست میں لے لیا ہے جو اس کے اغواء اور زیادتی میں ملوث ہیں۔ جبکہ 3تاحال مفرور ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -