برطانیہ کو اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ، 15.5فیصد طالب علموں کے لیے صرف 1 ٹیچر دستیاب : ایجوکیشن پالیسی انسٹیٹیوٹ

برطانیہ کو اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ، 15.5فیصد طالب علموں کے لیے صرف 1 ٹیچر ...
برطانیہ کو اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ، 15.5فیصد طالب علموں کے لیے صرف 1 ٹیچر دستیاب : ایجوکیشن پالیسی انسٹیٹیوٹ

  

لندن(آئی این پی )برطانوی تھنک ٹینک ایجوکیشن پالیسی انسٹیٹیوٹ نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ برطانیہ کو اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ہے، 15.5فیصد طالب علموں کے لیے صرف 1 ٹیچر رہ گیا ہے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق برطانوی تھنک ٹینک ایجوکیشن پالیسی انسٹیٹیوٹ نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ موسم گرما کی چھٹیوں کے بعد برطانیہ کے سکولوں میں دوبارہ تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز ہونے جا رہا ہے، تاہم اب تک سکولوں میں اساتذہ کی کمی کے مسئلے کو حل نہیں کیا جاسکا۔برطانوی تھنک ٹینک کا کہنا ہے کہ اساتذہ کی تنخواہوں میں اضافے سے ٹیچرز کی کمی کا مسئلہ کافی حد تک حل ہو سکتا ہے۔برطانیہ کے سیکریٹری ایجوکیشن ڈیمن ہنڈز کا کہنا ہے کہ تعلیمی عملے کی بھرتی ہماری پہلی ترجیج ہے۔تھنک ٹینک نے متنبہ کیا ہے کہ تعلیمی عملے کی کمی کے باعث استادوں کا تناسب کم ہوگیا ہے جس کے بعد 15 اعشاریہ 5 فیصد طالب علموں کے لیے صرف 1 ٹیچر رہ گیا ہے۔

تھنک ٹینک کی رپورٹ کے مطابق دارالحکومت لندن کے ارد گرد آباد علاقوں میں 17 فیصد فزکس ٹیچرز ایسے ہیں جو اپنے شعبے میں ڈگری رکھتے ہیں جبکہ ملکی کے دیگر علاقوں میں کل 52 فیصد فزکس ٹیچرز ہیں جو مذکورہ شعبے میں ڈگری کے حامل ہیں۔تھنک ٹینک نے رپورٹ میں بتایا ہے کہ ملک کے کچھ سرد علاقے ایسے ہیں جہاں سکولوں میں ایسے ٹیچرز کی کمی ہے جو اپنے شعبے میں ڈگری کا حامل ہو۔

مزید :

بین الاقوامی -