سرکاری محکموں کے کنٹرولڈعلاقوں کے تنازعات حل کرنیکا فیصلہ

سرکاری محکموں کے کنٹرولڈعلاقوں کے تنازعات حل کرنیکا فیصلہ

  

لاہور(سٹی رپورٹر) کس محکمے کا کونسا کنٹرولڈ ایریا ہوگا؟علاقوں سے متعلق تنازعات حل کرنے کا فیصلہ، میٹروپولیٹن کارپوریشن نے کنٹرولڈ ایریاز سے متعلق ورکنگ پیپر تیار کرلیا۔ذرائع کے مطابق میٹروپولیٹن کارپوریشن اور ایل ڈی اے کے کنٹرولڈ ایریا سے متعلق تیار کردہ ورکنگ پیپر کے مطابق پنجاب حکومت نے کنٹرولڈ ایریا کی 10 روز میں بریفنگ مانگ لی جبکہ مشیر وزیر اعلی ڈاکٹر سلمان شاہ کی قیادت میں کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے شہر کی 23 ہاسنگ سکیموں کا کنٹرول ایل ڈی اے کے پاس ہے جبکہ سکیموں کی شاہراہوں کی تعمیرو بحالی میٹروپولیٹن کارپوریشن کی ذمہ داری ہے، سڑکوں کی تعمیر و بحالی کیلئے کروڑوں روپے کے فنڈز ایل ڈی اے کے پاس آتے ہیں لیکن ترقیاتی فنڈز میٹروپولیٹن کارپوریشن کے بجٹ سے خرچ ہو رہے ہیں ایل ڈی کنٹرولڈ ایریا کی 23سکیموں میں گورنمنٹ ایمپلائز ہاؤسنگ سکیم رائیونڈ روڈ، میڈیکل ٹاؤن جاتی امرا، سوئی نادرن گیس موضع اصل، آرمی ٹرسٹ ویلفیئر رائیونڈ، چنار کورٹس جاتی امرا، بیکن ہاس موضع تارو گلی، نیو لاہور سٹی، این ایف سی فیز ٹو، او پی ایف، شادمان ڈویلپمنٹ سکیم، اپر مال سکیم، سمن آباد سکیم شامل ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -