کشمیری پاکستان اور ہمارے وزیراعظم امریکہ کی طرف دیکھ رہے ہیں: سراج الحق

    کشمیری پاکستان اور ہمارے وزیراعظم امریکہ کی طرف دیکھ رہے ہیں: سراج الحق

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ کشمیری پاکستان اور ہمارے وزیر اعظم امریکہ کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ وزیر اعظم گھبرائیں نہیں پوری قوم ان کے ساتھ ہے۔ حکومت کشمیر کی آزادی کیلئے جو بھی اقدامات کرے گی ہم اس کے ساتھ ہیں۔حکومت کی طرف سے کشمیر یوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کی اپیل کو سپورٹ کرتے ہیں۔حکومت اب بیانات اور تقریروں سے آگے بڑھ کر عملی اقدامات کرے۔ نہتے کشمیریوں اور محبوس ماؤں بہنوں بیٹیوں کی مدد کی جائے۔کشمیر کے مسئلے پر پوری قوم اور سیاسی قیادت یکسو اور ایک پیج پر ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے مظاہرے میں شرکت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 26دن کے کرفیو کے نتیجہ میں زندگی رک گئی ہے اور ہزاروں لوگ خوراک،ادویات،دودھ اور پینے کے پانی تک کو ترس رہے ہیں لیکن دنیا خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔اس سے پہلے کہ کوئی بہت بڑا انسانی المیہ رونما ہو دنیا کو آگے بڑھ کر بھارت کے ظلم وجبر اور بھارتی فوج کے ہاتھوں کشمیر یوں کے قتل عام کوروکنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ایسی خبریں آرہی ہیں کہ بھارت آرایس ایس کے غنڈوں کے اسلحہ بردارجتھوں کو کشمیر میں داخل کررہا ہے اور انہیں کشمیر کے نہتے مسلمانوں کے قتل عام کا ٹارگٹ دیا گیا ہے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ حکومت نعرے بازی اور دعوؤں کے علاوہ بھی کوئی کام کرے۔جب تک حکومت کشمیریوں کے تحفظ اور انہیں بھارت کے پنجہ استبداد سے آزاد کرانے کیلئے کوئی عملی قدم نہیں اٹھاتی دنیا پاکستان کی طرف دیکھتی رہے گی۔انہوں نے کہا کہ عالمی ادارے اور دنیا اس وقت حرکت میں آئے گی جب انہیں یقین ہوگیا کہ اب ان کی مداخلت کے بغیر کوئی چارہ نہیں رہا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ کشمیری پاکستان اور ہمارے وزیر اعظم امریکہ کی طرف دیکھ رہے  ہیں۔ امریکہ کی طرف دیکھ رہی ہے،حکومت کو چاہئے تھا کہ اب تک ایل او سی پر لگی باڑ کو اکھاڑ پھینکتی اور شملہ معاہدے کو اٹھا کر مودی کے منہ پر مارتی مگر حکومت ابھی تک شش و پنج میں مبتلا ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کب تک بھارت کے ہاتھوں کشمیریوں پر ہونے والے ظلم و جبر اور کشمیریوں کے قتل عام کو دیکھتی رہے گی۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -