شا ہ محمود  کا سعودی عرب، جنوبی کورین ہم منصوبوں سے رابطہ، کشمیر کی صورتحال پر گفتگو

شا ہ محمود  کا سعودی عرب، جنوبی کورین ہم منصوبوں سے رابطہ، کشمیر کی صورتحال ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)  وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے مقبوضہ کشمیر کے لوگ 26روز سے بد ترین کرفیو کا سامنا کر رہے ہیں، بھارتی فورسز رات کے وقت گھروں میں گھس کر نوجوانوں کو اغوا کر رہی ہے،مقبوضہ کشمیر میں ذرائع مواصلات پر مکمل پابندی عائد ہے، بھارتی حکومت حقائق کو دنیا کی نظر سے چھپانے کی کوشش کر رہی ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سعودی ہم منصب عادل الجبیر اور جنوبی کوریا کی وزیر خارجہ کانگ کیونگ وہا کو فون کیا اور مسئلہ کشمیر پر گفتگو کی۔ شاہ محمود قریشی نے کہا بھارت نے غیر قانونی یکطرفہ اقدامات سے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی اور جبرا مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو سے خوراک و ادویات کی شدید قلت پیدا ہوچکی، انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں سنگین خلاف ورزیوں کی نشاندہی کررہی ہیں، بھارتی یکطرفہ اقدامات عالمی قوانین اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے منافی ہیں، بھارتی جارحیت روکنے کیلئے عالمی برادری موثر کردار ادا کرے۔وزیر خارجہ نے اپنے سعودی ہم منصب کو اس سلسلے میں مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ سے ہونیوالے حالیہ روابط اور سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ،صدر سیکورٹی کونسل اور سیکریٹری جنرل او آئی سی کو لکھے گئے خطوط کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا۔ سعودی وزیرخارجہ نے مقبوضہ کشمیرکی صورتحال پراظہارتشویش کرتے ہوئے خطے میں قیام امن کیلئے روابط کاسلسلہ جاری رکھنے پراتفاق کیا۔جنوبی کوریا کی وزیر خارجہ نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا بنیادی انسانی حقوق کی پامالی اہم مسئلہ ہے جس کا سدباب ہونا چاہیے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا ہمیں کورین حکومت سے موثر کردار کی توقع ہے۔ صورتحال اس قدر تشویشناک ہے کہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں کشمیریوں کے بہیمانہ قتل عام کا خدشہ ظاہر کر چکی ہیں، بین الاقوامی میڈیا روزانہ کی بنیاد پر بھارتی جبر و استبداد کے المناک مناظر دنیا بھر کے سامنے لا رہا ہے۔ وزیر خارجہ نے اپنی ہم منصب کانگ کیونگ وا سے کہا آپ خود جنیوا میں انسانی حقوق کے تحفظ کیلئے خدمات سر انجام دے چکی ہیں اور صورتحال کی نزاکت اور نوعیت کا ادراک رکھتی ہیں جبکہ صدر جنوبی کوریا انسانی حقوق کی وکالت کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں ہمیں کورین حکومت سے مؤثر کردار کی توقع ہے۔جنوبی کوریا کی وزیر خارجہ نے کہا وہ ساری صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں، بنیادی انسانی حقوق کی پامالی اہم مسئلہ ہے جس کا سدباب ہونا چاہیے۔

شاہ محمود 

مزید :

صفحہ اول -