قندیل بلوچ کیس: مقتولہ کے والدین اچانک اپنے بیانات سے منحرف

قندیل بلوچ کیس: مقتولہ کے والدین اچانک اپنے بیانات سے منحرف

  

ملتان (وقائع نگار)سیشن کورٹ میں ماڈل قندیل بلوچ قتل کیس میں مقتولہ کے والدین بھی اپنے موقف سے انحراف کر گئے اور ملزمان کے کردار سے لاعلمی کا اظہار کر دیا جنہوں نے عدالت میں بطور گواہ بیانات قلمبند کرادیے اور پولیس کو 161 کے تحت دیے گئے بیانات سے منحرف ہوگئے جس پر ماڈل کورٹ نے مزید گواہوں کی شہادتوں کیلئے سماعت آج 31 اگست تک ملتوی کردی ہے۔فاضل (بقیہ نمبر29صفحہ12پر)

عدالت میں قندیل بلوچ قتل کیس میں مقتولہ کے والد و مدعی عظیم ماہڑہ اور والدہ انور بی بی پولیس کو پہلے سے دئیے گئے بیانات سے منحرف ہوگئے۔جو عدالت نے قلمبند کرلیے اور وکلا نے دونوں گواہان پر جرح بھی کی۔کیس کی سماعت پر ملزمان وسیم،مفتی عبدالقوی، عبدالباسط، حقنواز اور ظفر عدالت میں پیش ہوئے۔ کیس میں اب تک 30 گواہوں کی شہادتیں مکمل کی جا چکی ہیں عدالت نے مزید گواہوں کی شہادتوں کیلئے سماعت آج 31 اگست تک ملتوی کردی ہے۔ واضح رہے کہ قندیل بلوچ کو 15 جولائی 2016 کو مظفر آباد میں قتل کردیا گیا تھا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -