والد کے نام کی غلطی کیوجہ سے سزا میں کمی نہ ہونے کیخلاف جیل میں قیدشہری کا عدالت سے رجوع

  والد کے نام کی غلطی کیوجہ سے سزا میں کمی نہ ہونے کیخلاف جیل میں قیدشہری کا ...

  

پشاور(نیوزرپورٹر)والد کے نام کی غلطی کیوجہ سے سزا میں کمی نہ ہونے کیخلاف جیل میں قیدشہری نے عدالت سے رجوع کرلیا، گزشتہ روز عدالت عالیہ پشاور میں ممریز نامی قیدی کی کیس کی سماعت جسٹس روح الامین اور جسٹس محمد نعیم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے کی، رٹ میں صوبائی حکومت، سیکرٹری داخلہ، انسپکٹر جنرل جیل خانہ جات اور سپرنٹنڈنٹ جیل ہری پور کو فریق بنایا گیا ہے، پٹیشنر کے وکیل خورشیدخان نے عدالت کو بتایا کہ ممریز کو سال 2017 میں عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی تاہم بعد ازاں عدالت عالیہ نے سزا چودہ سال کردی تھی، قیدی کا نام ممریز ولد محمد مسکین ہے جبکہ ٹرائل کورٹ میں ممریززولد مسکین لکھا گیا ہے، والد کے نام کی غلطی کی وجہ سے سزا میں کمی نہیں ہورہی، وکیل کے مطابق جیل میں ناظرہ قرآن، اردو ادب اور ایف اے بھی کیا مگرپھربھی سزا میں کمی نہیں ہوئی، جسٹس روح الامین نے کیس میں قیدی ممریز کا شناختی کارڈ وکیل سے طلب کرلیاجبکہ وکیل کے قیدی کے والد کا نام ٹھیک کرنے کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت اگلی پیشی تک کیلئے ملتوی کردی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -