پارا چنار،روحانی پیشو ا کا مزار کھولنے کیلئے عقیدت مندوں کا احتجاج

پارا چنار،روحانی پیشو ا کا مزار کھولنے کیلئے عقیدت مندوں کا احتجاج

  

پاراچنار(نمائندہ پاکستان)پاراچنار میں روحانی پیشوا میرانور شاہ کے عقیدت مندوں نے ان کے مزار کو کھولنے کے لیے احتجاج شروع کیا ہے اور پولیو بائیکاٹ کے ساتھ دوسرے مرحلے میں کوٹ کچہری جانے اور اپنے بچوں کو سکول نہ بھیجنے کا اعلان کیا ہے پولیو بائیکاٹ کے اعلان کی وجہ سے حالیہ ویکسینشن میں بارہ ہزار بچے ویکسین کے قطروں سے محروم رہے کلایہ اورکزئی میں روحانی پیشوا میر انور شاہ کا مزار زائرین کے لیے بند رکھنے کے حلاف ان کے عقیدت مندوں نے پاراچنار میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مظہر حسین، ماہر حسین اور سابق ایم این اے منیر سید میاں نے کہا کہ سکھوں اور دوسری مزاھب کے لیے اپنے عبادت گاہوں پر حاضری کی اجازت ہے اور سب کے لئے قابل احترام روحانی پیشوا میرانور شاہ کا مزار زائرین کے لیے بند ہے۔ اور تزئین و آرائش کی اجازت نہ ہونے کی وجہ سے منہدم ہونے کا خدشہ ہے۔ راہنماؤں نے کہا کہ پہلے مرحلے میں پولیو ویکسینشن کا بائیکاٹ کیا تھا۔اور پہلے ویکسینشن میں بارہ ہزار بچے پولیو کے قطروں سے محروم رہے۔اب دوسرے مرحلے میں کورٹ کچہری کے بائیکاٹ کے ساتھ ساتھ اپنے بچوں کو بھی سکول نہیں بھیجنگے۔اور سرکاری ملازمین بھی احتجاجآ ہڑتال کریں گے۔دوسری جانب ضلع کرم سے رکن قومی اسمبلی ساجد طوری کا کہنا ہے کہ روحانی پیشوا کا مزار بند رکھنا درست نہیں۔کیونکہ وہ ہم سب کے لئے قابل احترام ہے۔ متعلقہ حکام فوری طور مزار زائرین کے لیے کھول دین۔تاہم بچوں کو پولیو کے قطروں سے محروم رکھنا دانشمندی نہیں۔ اس سے ہمارے بچے ہی اپاہچ ہوں گے۔اور میاں انور غگ کمیٹی کے راہنماؤں کا کہنا ہے کہ انہیں پولیو ویکسین کے قطرے بچوں کو نہ دینے کے نقصان کا علم ہے مگر مجبوری کی تحت ہم یہ قدم اٹھا رہے ہیں۔کیونکہ کوئی ہماری آواز نہیں سن رہا ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -