جمہوری روایات کے فروغ میں صحافیوں کا کلیدی کرداررہا ہے، محمود خان

جمہوری روایات کے فروغ میں صحافیوں کا کلیدی کرداررہا ہے، محمود خان

  

پشاور(سٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے پشاور پریس کلب کی نومنتخب کابینہ سے باضابطہ حلف لیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ جمہوری اقدار کے فروغ اور انسانی حقوق کے تحفظ کیلئے صحافی برادری کی قربانیاں کسی سے پوشیدہ نہیں۔تحریک انصاف جب سے حکومت میں آئی اسے سابق فاٹا کا صوبے میں انضمام، دہشت گردی کے خلاف جنگ اورامن عامہ کی بحالی جیسے سنگین چیلنجز کا سامنا تھا۔ صوبائی حکومت ان تمام مسائل کو حل کرنے میں سرخرو ہوئی ہے جس میں صحافی برادری کا کردار لائق تحسین ہے۔ صوبائی حکومت نے صحافی برادری کے مسائل کے حل کیلئے گراں قدر اقدامات کئے ہیں، پشاور میں میڈیا کالونی کے قیام کی منظوری پہلے سے دی جا چکی ہے اور جرنلسٹس ویلفیئر انڈو منٹ فنڈ (ترمیمی بل 2019) کی صوبائی کابینہ سے منظوری لی گئی ہے جس کے تحت صحافیوں کو دی جانے والی سہولیات میں اضافہ کیا گیاہے۔ اُنہوں نے اس موقع پر پشاور پریس کلب کیلئے ڈیڑھ کروڑ روپے کی امداد، صحافیوں کیلئے صحت انصاف کارڈ کے اجراء اور خیبر یونین آف جرنلسٹس کیلئے 50 لاکھ روپے امداد کا بھی اعلان کیا۔ اُنہوں نے اُمید ظاہر کی کہ صحافی برادری حسب سابق صوبائی حکومت کے عوام دوست اقدامات کو اُجاگر کرے گی۔ ہم سب مل کر اس صوبے کو اُٹھائیں گے اور عوام کو مایوس نہیں ہونے دیں گے۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں پشاور پریس کلب کی نو منتخب کابینہ کی حلف برداری تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ صوبائی وزیراطلاعات شوکت علی یوسفزئی، وزیراعلیٰ کے مشیر برائے ضم شدہ اضلاع اجمل وزیر، سیکرٹری اطلاعات امتیاز ایوب، ڈائریکٹر جنرل اطلاعات امداد اللہ، سینئر صحافی حضرات، پشاور پریس کلب کے صدر سید بخار شاہ اور کابینہ کے دیگر اراکین نے تقریب میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ نے نومنتخب کابینہ کو مبارکباد دی اور اُمید ظاہر کی کہ نومنتخب صدور اور اُن کی کابینہ صحافیو ں کی فلاح و بہبود کیلئے اپنی قائدانہ صلاحیتیں بروئے کار لائیں گے اور صحافی برادری کے اعتماد پر پورا اُترنے کی بھر پور کوشش کریں گے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ صحافی برادری نامساعد حالات میں جس انداز سے عوام کے مسائل کو اُجاگر کرتی اور حکومت وقت کو ان مسائل سے باخبر رکھتی ہے وہ قابل ستائش ہے۔ اُنہوں نے کہاکہ تحریک انصاف صحافی برادری کی گراں قدر خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ اُنہوں نے یقین دلایا کہ حکومت دستیاب وسائل کے مطابق جس حد تک ممکن ہوا صحافی برادری کی مدد کیلئے حاضر ہو گی۔محمود خان نے صوبائی حکومت کی طرف سے صحافی برادری کیلئے اُٹھائے گئے اہم اقداما ت کا بھی ذکر کیا اور کہاکہ خیبرپختونخوا جرنلسٹس ویلفیئر انڈومنٹ فنڈترمیمی بل 2019 کی صوبائی کابینہ منظوری دے چکی ہے۔ نئی ترامیم کے مطابق صحافیوں کیلئے تجہیز و تکفین کے اخراجات میں اضافہ کیا گیا ہے اور ویلفیئر فنڈ میں الیکٹرانک میڈیا سے منسلک صحافیوں کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ بے روزگار صحافیوں کو دو مہینوں تک گزارہ الاؤنس کی فراہمی، 60 سال سے زائد عمر کے صحافیوں کو ماہانہ وظیفہ کی فراہمی، صحافیوں کے بچوں اور بچیوں کو ایک بار شادی کیلئے مالی معاونت، میڈیکل ٹریٹمنٹ کی مد میں صحافیوں کی مالی معاونت بھی ترمیمی بل میں شامل ہیں۔ اُنہوں نے انکشاف کیا کہ پشاور پریس کلب کے 325 صحافیوں کو پرویژنل الاٹمنٹ لیٹرز دیئے گئے ہیں۔ گزشتہ پانچ سال کے دوران صوبائی حکومت نے جرنلسٹس ویلفیئر انڈومنٹ فنڈ کے تحت صوبے بھر کی صحافی برادری میں اب تک تقریباً14.7 ملین روپے علاج معالجے کے ضمن میں دیئے ہیں۔ اُنہوں نے مزید انکشاف کیا کہ صوبائی حکومت نے صحافی برادری کے مابین اختلافات کے حل کیلئے صوبائی سطح پر ایک کمیٹی تشکیل دی ہے جس میں پشاور پریس کلب کے صدر، خیبریونین آف جرنلسٹس کے صدر، متعلقہ علاقائی انفارمیشن آفیسرز اور ڈپٹی کمشنر شامل ہیں۔ اُنہوں نے انکشاف کیا کہ آئندہ چند دنوں میں صوبائی حکومت کی ایک سالہ کارکردگی بھی میڈیا کے ذریعے عوام کے سامنے رکھیں گے۔ وزیراعظم عمران خان اس موقع پر مہمان خصوصی ہوں گے۔ وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی اور وزیراعلیٰ کے مشیر اجمل وزیر نے بھی تقریب سے خطاب کیا اور صحافی برادری کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔

<><><><>

پشاور(سٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے مود ی کو پیغام دیا ہے کہ پاکستان اور خیبر پختونخوا میں ایسے بہادر اور غیور لوگ بستے ہیں کہ اگر وزیراعظم پاکستان کا حکم ملا تو نہ انڈیا رہے گا نہ انڈیا کاباجارہے گا۔اُنہوں نے کہا ہے کہ جب تک وزیراعظم پاکستان کا دوسرا حکم نہیں ملتا،ریلیوں کا سلسلہ جاری رہے گا۔ ہر جمعہ 12:00 سے 12:30 تک صوبائی حکومت کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ریلی نکالے گی۔کشمیری بھائیوں کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ پوری پاکستان عوام آپ کے ساتھ کھڑی تھی اور کھڑی ہے، جو ظلم مودی نے مقبوضہ کشمیر میں شروع کر رکھا ہے۔مودی کو پیغام دینا چاہتا ہوں کہ خیبرپختونخوا میں ایسے بہادر لوگ بستے ہیں کہ اگر حکم ملا تو انڈیا کا نام ونشان مٹا دیں گے۔ اُنہوں نے یونائیٹڈ نیشن سے ایک پیغام میں کہا ہے کہ آئیں اور مقبوضہ کشمیر کے عوام کو ان کا حق خود ارادیت دلا دیں۔انہوں نے مزید کہاکہ اگر یونائیٹڈ نیشن مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ حل نہیں کرتا تو پھر پاکستان اور خیبرپختونخوا کے عوام وزیراعظم عمران خان کے حکم کا انتظار کریں گے اور ہم سب مقبوضہ کشمیر کے بھائیوں کے حق کیلئے میدان میں لڑیں گے اور مقبوضہ کشمیر کو آزاد کرکے دکھائیں گے۔ وہ پشاور میں مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے حوالے سے نکالی گئی ریلی سے خطاب کررہے تھے۔ ریلی میں گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان، سپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق غنی، صوبائی وزراء، اراکین صوبائی اسمبلی، وزیراعلیٰ کے پرنسپل سیکرٹری شہاب علی شاہ، آئی جی پی ڈاکٹر محمد نعیم خان، سی سی پی او پشاور و دیگر سیاسی رہنماؤں اور حکومتی اہلکاروں نے شرکت کی۔ ریلی نے صوبائی اسمبلی سے وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور تک مارچ کیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں لوگ شریک ہوئے۔ ریلی کی قیادت وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان اور گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان کر رہے تھے۔ ریلی کے دوران مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف نعرہ بازی کی گئی جبکہ کشمیر بنے گا پاکستان کے نعروں سے بھی ریلی گونج اُٹھی۔ ریلی سے خطاب کے دوران وزیراعلیٰ کا کہنا تھاکہ وزیراعظم پاکستان کی ہدایت کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم وجبر کے خلاف یہ ریلی نکالی گئی ہے جس کا مقصد کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی منانا ہے۔ریلی کے شرکاء نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم کے خلاف شدید نعرہ بازی کی اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر کے معصوم عوام کو بھارتی مظالم سے آزاد کرایا جائے۔ وزیراعلیٰ نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ جب آزاد کشمیر ہمارے قبضے میں آیا اور پاکستان کے غیو ر عوام مقبوضہ کشمیر کو فتح کرنے والے تھے تو انڈیا کی بزدل حکومت اُس وقت خود اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ لے کرگئی۔ اقوام متحدہ نے کشمیر پر قرارداد پاس کی تھی جس کے مطابق کشمیریوں کو حق خود ارادیت کا حق دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہاکہ اب ہم اقوام متحدہ سے اپیل کرتے ہیں کہ اپنی قرارداد کی پاسداری رکھتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کو فاشسٹ مودی کے ظلم وجبر سے آزادی دلا دے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ اگر اقوام متحدہ یہ مسئلہ حل نہیں کرتا تو پھر پاکستان اور خیبرپختونخو اکے عوام وزیراعظم کے حکم کا انتظار کریں گے اور جیسے ہی حکم ملے ہم سب مقبوضہ کشمیر میں جہاد کیلئے جائیں گے اور مقبوضہ کشمیر کو آزاد کرائیں گے۔ ریلی کے آخر میں وزیراعلیٰ نے کشمیر کی آزاد کیلئے دُعا کی کہ اور کہاکہ اللہ ہمیں ہمت دے کہ کشمیر کو آزاد کرائیں۔ اُنہوں نے ریلی کے اختتام پر کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ لگایا۔

مزید :

صفحہ اول -