حکومت مقبوضہ کشمیر پرسنجیدہ سفارتکاری کرے، بھارت کو مقبوضہ کشمیرسے کرفیواور انفارمیشن بلیک آو¿ٹ ختم کرنے پرمجبور کیا جائے ، احسن اقبال

حکومت مقبوضہ کشمیر پرسنجیدہ سفارتکاری کرے، بھارت کو مقبوضہ کشمیرسے ...
حکومت مقبوضہ کشمیر پرسنجیدہ سفارتکاری کرے، بھارت کو مقبوضہ کشمیرسے کرفیواور انفارمیشن بلیک آو¿ٹ ختم کرنے پرمجبور کیا جائے ، احسن اقبال

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہا ہے کہ حکومت مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پرفوری سنجیدہ سفارتکاری کرے، بھارت کو مقبوضہ کشمیرسے کرفیواور انفارمیشن بلیک آؤٹ ختم کرنے پرمجبور کیا جائے ،امریکی صدر اور دیگر ممالک کو کہا جاتا کہ فوری طور پر بلیک آوٹ ختم کرائیں،لیگی رہنما کا کہناتھا کہ او آئی سی کا خصوصی اجلاس فوری طور پر طلب کیا جائے ، وزیراعظم کو چاہیے تھا کہ مسلم ممالک کو مسئلہ کشمیر سے آگاہ کرتے ، وزیراعظم کا فرض تھا کہ مسلم ممالک کے ہنگامی دورے پر روانہ ہوتے ۔انہوں نے کہا کہ پوری قوم مسئلہ کشمیر پر موقف کا اظہار کرچکی ہے،گوادر سے گلگت تک سب کشمیریوں کےساتھ ہیں،کشمیر کے مسئلے پر حکومتی پالیسیوں پر تشویش ہے،حکومت مسئلہ کشمیر کے معاملے پر غیر سنجیدہ دکھائی دیتی ہے،مسئلہ کشمیر پر وزیرخارجہ صرف چین گئے ،وزیر خارجہ ملتان،نادرا یا مقامی جگہوں کا دورہ کرتے ہیں ،شاہ محمود قریشی کو کشمیر کے معاملے پر بیرون ملک ہونا چاہیے ،وزیرخارجہ نے سعودی ہم منصب سے 25 دن بعد رابطہ کیا، حکومت کو دنیا کے اہم وزراءخارجہ کے ساتھ کھڑے ہوکر پریس کانفرنس کرنا چاہیے تھی۔

لیگی رہنما نے کہا کہ حکومت سارا زور ایسی سرگرمیوں پر لگا رہی ہے جس سے کشمیریوں کو کوئی فائدہ نہیں، پاکستان کو سفارتکاری کی ضرورت ہے کیا ان پچاس میں کوئی اس لائق نہیں ،پچاس سے زائد وزیروں میں کیا کوئی اس قابل نہیں کہ کشمیر کا مقدمہ پیش کرتا، یہ اناڑی اور ناتجربہ کار ہیں ان کو نہیں پتا کیسے سفارتکاری کی جاتی ہے ، مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہا کہ بھارت کو مقبوضہ کشمیرسے کرفیواور انفارمیشن بلیک آؤٹ ختم کرنے پرمجبور کیا جائے ، امریکی صدر اور دیگر ممالک کو کہا جاتا کہ فوری طور پر بلیک آوٹ ختم کرائیں۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -