NUST یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کرنے والے الیکٹریکل انجینئر نے پھل بیچنے کے لیے ریڑھی لگا لی، اس کام کی وجہ جان کر ہر کوئی داد دینے پر مجبور ہوجائے

NUST یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کرنے والے الیکٹریکل انجینئر نے پھل بیچنے کے لیے ...
NUST یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کرنے والے الیکٹریکل انجینئر نے پھل بیچنے کے لیے ریڑھی لگا لی، اس کام کی وجہ جان کر ہر کوئی داد دینے پر مجبور ہوجائے

  

قصور(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس اور لاک ڈاﺅن سے ہزاروں لوگوں کو شکوہ ہے کہ ان کی وجہ سے ان کا روزگار چھن گیا لیکن قصور کے اس نوجوان کی کام سے لگن نے ثابت کر دیا ہے کہ ہر طرح کی صورتحال میں انسان کے لیے مواقع موجود ہوتے ہیں۔ انڈیپنڈنٹ اردو کے مطابق اس نوجوان کا نام عثمان اشرف ہے جس نے اسی سال نسٹ یونیورسٹی سے سکالرشپ پر الیکٹریکل انجینئرنگ کی ڈگری مکمل کی۔ جونہی اس کی ڈگری مکمل ہوئی، کورونا وائرس کی وباءآ گئی اور ملک میں لاک ڈاﺅن شروع ہو گیا لیکن اس نے ہمت نہیں ہاری اور جو یونیورسٹی میں سیکھا، اس کا عملی تجربہ حاصل کرنے کے لیے پھلوں کا ٹھیلہ لگا لیا۔

عثمان اشرف کا کہنا ہے کہ ”میں بچپن میں اپنے والد کے ساتھ پھلوں کے ٹھیلے پر کام کر چکا ہوں۔ اب میرے پاس تعلیم تھی تو میں نے سوچا کہ میں یہ کام مختلف انداز سے کر سکتا ہوں۔ میں بہتر طور پر گاہکوں کو ڈیل کر سکتا ہوں اور مارکیٹنگ کر سکتا ہوں چنانچہ مجھے یونیورسٹی میں جو پڑھایا گیا اس پر عمل میں نے اس پھلوں کی ریڑھی کی صورت میں شروع کر دیا۔ہم سات بہن بھائی ہیں اور 2کمروں کے کرائے کے گھر میں رہتے ہیں۔ میں نے چھٹی جماعت کے بعد سے اپنی پوری تعلیم لوگوں کی مدد اور وظیفوں سے ہی پوری کی ہے۔ مجھے یاد ہے کہ ایک بار سکول کی فیس نہ ہونے کی وجہ سے مجھے سکول سے نکال دیا گیا تھا لیکن میں نے ہمت نہیں ہاری اور ایک دوسرے سکول سے میٹرک کا امتحان دے دیا۔ میرا نام لاہور بورڈ کے ٹاپ 50طالب علموں میں شامل تھا۔“

رپورٹ کے مطابق عثمان اشرف نے میٹرک کے بعد گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور(جی سی یولاہور) میں داخلے کے لیے درخواست دی۔ اس کا نام تو فہرست میں آ گیا لیکن اس کے پاس داخلے کی فیس نہیں تھی۔ کسی طرح فیس جمع ہو گئی اور اس نے وہاں سے ایف ایس سی کرنے کے بعد ایک انٹرنیٹ کیفے سے نسٹ میں داخلے کے لیے اپلائی کر دیا اور اب وہاں سے فارغ التحصیل ہو کر نوکری کی تلاش میں ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے نوکری جلد ملنا مشکل نظر آیا تو اس نے ہمت نہیں ہاری اور پھلوں کی ریڑھی لگا کر ہی عملی زندگی کا آغاز کر دیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -علاقائی -پنجاب -قصور -