صوبائی اسمبلی چوک ایک بار پھر میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا

صوبائی اسمبلی چوک ایک بار پھر میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا

  

پشاور(سٹی رپورٹر)صوبائی اسمبلی چوک ایک بار پھر میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا نجی سکولز ایسو سی ایشن کے مالکان کی جانب سے واجبات کی عدم ادائیگی کے حوالے سے صوبائی اسمبلی کے سامنے طلباء کے ہمراہ احتجاجی مظاہرہ کر رہے تھے جسمیں کثیر تعداد میں افراد شریک تھے مظاہرین کا کہنا تھا کہ2017ایلیمنٹر ایجوکیشن فاونڈیشن نے واجبات کی ادائیگی نہیں کی گئی صوبے میں 1030 سکولوں کے 92 ہزار طلباء ہمارے پاس زیر تعلیم ہیں،ایم ڈی ظریف مانی نئے سکولوں میں سروے کررہے ہیں جبکہ ہمارے واجبات کی ادائیگی متعدد نوٹیفکیشن کے باوجود نہیں کررہے تاہم مظاہرین پر پولیس نے دھاو بولتے ہوئے پکڑ دھکڑ شروع کر دی جسکی وجہ سے  اسمبلی چوک میدان  جنگ بن گیا  اور پولیس نے لاٹھی چارج بھی کیا  جبکہ متعدد اساتذہ کو گرفتار کیا پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج سے مظاہرے میں شریک طلباء میں خوف و ہراس پھیل گیا  پولیس کی جانب سے پکڑ دھکڑ اور لاٹھی چارج کے بعد خیبر روڈ  کو ٹریفک کیلئے کھول دیا گیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -