عوام کو ریلیف کے نتائج نظر آنے چاہئیں، پرچون اور تھوک قیمتوں میں غیر منطقی فرق ختم کیا جائے: عمران خان 

      عوام کو ریلیف کے نتائج نظر آنے چاہئیں، پرچون اور تھوک قیمتوں میں غیر ...

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے چیف سیکریٹریز کو ہدایت کی ہے کہ وہ اشیا ئے ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام پیدا کرنے کیلئے تمام ممکنہ انتظامی اقدامات کریں۔انہوں نے اپنی زیر صدارت جائزہ اجلاس میں کہی۔انہوں نے کہاکہ پرچون اور تھوک فروشوں کی قیمتوں کے درمیان غیر منطقی فرق ختم کیاجائے۔ عمران خان نے کہا کہ عوام کو ریلیف کی فراہمی کیلئے انتظامی اقدامات کے نتائج نظرآنے چاہیں۔وزیراعظم نے چینی اور گندم کی مستقبل کی ضروریات کے پیش نظر اقدامات پر بروقت عملدرآمد یقینی بنانے کیلئے جامع منصوبہ بندی کرنے کو بھی کہا۔عمران خان نے کہا کہ عام آدمی کو مہنگائی سے تحفظ دینا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ کورونا وائرس کی وبا کے دوبارہ پھیلاؤ کو روکنے میں حکومت کا ساتھ دیں اور حفاظتی تدابیر پر عملدرآمد کریں۔ٹوئٹر پر وزیراعظم نے ”ماسک پہنیں، زندگیاں بچائیں ”کے ہیش ٹیگ کے ساتھ خیر خواہ، ایک دوسرے کے خیر خواہ کے ٹائٹل سے ایک ویڈیو جاری کی۔ادھرعمران خان نے وزارت داخلہ اور وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کمیونیکیشن کے متعلقہ افسران کے اجلاس کی صدارت کی جس میں یونیورسل پاکستان ایمرجنسی ہیلپ لائن (PEHEL) -911 کے قیام کے بارے میں وزیر اعظم کو اپ ڈیٹ سے آگاہ کیا گیا۔وزیراعظم کو بتایا گیا کہ بین الصوبائی رابطوں سمیت تمام ضروری کام مکمل ہوچکا ہے، اوراکتوبر 2021 کے پہلے ہفتے تک ہیلپ لائن باقاعدہافتتاح کے لیے تیار ہو گی۔مزید برآں وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ماضی میں چھوٹی صنعتوں کو نظر انداز کیا گیا،ہماری حکومت کی توجہ چھوٹی صنعتوں کو سہولیات دینے پر مرکوز ہے،ایز آف بزنس پالیسی کے تحت چھوٹے کاروبار کرنے والوں کو مراعات اور آسانیاں فراہم کی جائیں،مجوزہ ایس ایم ای پالیسی کو جلد از جلد حتمی شکل دی جائے۔ چھوٹے اور درمیانے کاروبار کے فروغ کے حوالے سے جائزہ اجلاس سے خطاب میں سیکریٹری صنعت و پیداوار ڈویژن نے اجلاس کو مجوزہ ایس ایم ای پالیسی کے خد و خال کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ چھوٹے اور درمیانے کاروبار پاکستان کی کل جی ڈی پی کا 40 فیصد حصہ ہیں۔وزیر اعظم نے کہاکہ ایس ایم ایز ملکی معیشت میں اہم ترین حیثیت کے حامل ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ماضی میں چھوٹی صنعتوں کو نظر انداز کیا گیا،ہماری حکومت کی توجہ چھوٹی صنعتوں کو سہولیات دینے پر مرکوز ہے۔ وزیر اعظم  نے کہاکہ ایز آف بزنس پالیسی کے تحت چھوٹے کاروبار کرنے والوں کو مراعات اور آسانیاں فراہم کی جائیں،مجوزہ ایس ایم ای پالیسی کو جلد از جلد حتمی شکل دی جائے۔ بعدازاں وزیر اعظم عمران خان سے چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل (ر) مزمل حسین نے ملاقات کی جس میں چیئرمین واپڈا نے وزیرِ اعظم کو ڈیکیڈ آف ڈیمز  (ڈیموں کی دہائی) کے تحت پاکستان میں جاری بڑے ڈیموں کی تعمیر پر پیش رفت سے آگاہ کیا۔وزیر اعظم نے ڈیموں کی تعمیر میں پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کرتے   ہوئے ہدایت کی کہ تعمیراتی کام کو مقرر کردہ مدت میں مکمل کرنے کے لئے اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔

عمران خان 

مزید :

صفحہ اول -