صوبائی کابینہ آج ایڈیشنل چیف سیکرٹری، سیکرٹریز جنوبی پنجاب کو با اختیار بنانے کی منظوری دیگی

  صوبائی کابینہ آج ایڈیشنل چیف سیکرٹری، سیکرٹریز جنوبی پنجاب کو با اختیار ...

  

 لاہور(محسن گورایہ)پنجاب کابینہ آج اپنے اجلاس میں جنوبی پنجاب سیکریٹریٹ،ایڈیشنل چیف سیکریٹری جنوبی پنجاب اور جنوبی پنجاب کے افسران کو مکمل طور پر با اختیار بنانے کی منظوری دے گی۔پانچ محکموں کی پالیسی سازی اور اعلیٰ سطحی فیصلوں کا اختیار فی الحال لاہور میں رکھا گیا ہے جن میں محکمہ خزانہ،ہوم،ایس اینڈ جی اے ڈی،بورڈ آف ریونیو اور قانون شامل ہیں مگر ایس اینڈ جی اے ڈی کا ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر وں اور اسسٹنٹ کمشنروں کے تبادلوں تقرریوں کا اختیار، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب کو دے دیا گیا ہے،ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب کو اب وہ تمام اختیارات دے دیے گئے ہیں جو پنجاب کے ایڈیشنل چیف سیکرٹری کو حاصل ہیں۔ اس طرح پنجاب حکومت جنوبی پنجاب کو با اختیار بنانے کے لئے ایک اور مرحلہ طے کر لے گی، جنوبی پنجاب کے معاملات کو بہتر انداز میں چلانے کے لئے رولز آف بزنس میں بڑی ترمیم ضروری تھی جس کے تحت انتظامی اور مالی معاملات میں صوبہ جنوبی پنجاب کے تمام محکموں کے سیکرٹریوں کو پنجاب کے محکموں کے سیکرٹریوں کی طرح با اختیار بنا نا تھا۔اب جنوبی پنجاب کے تمام سیکرٹریوں کو ترقیوں،تبادلوں، بھرتیوں اور چھٹیاں دینے سمیت اپنے محکموں میں وہ تمام اختیارات حاصل ہو گئے ہیں،جو پنجاب کے سیکرٹریوں کو حاصل ہیں۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی کے اس حوالے سے تحفظات پائے جا رہے تھے کہ صوبہ جنوبی پنجاب سیکرٹیریٹ بننے کے باوجود ابھی تک وہاں اختیارات منتقل نہیں ہوئے اور اس سلسلے میں پہلے بھی دو بار رولز میں ترمیم کی گئی تھی جس سے جنوبی پنجاب کے ارکان اسمبلی اور عوام مطمعن نہیں تھے اور اب تیسری بار یہ ترمیم کی جارہی ہے۔ اس ترمیم کے تحت جنوبی پنجاب میں تمام محکمے پنجاب کے تمام محکموں کی طرح با اختیار ہوں گیاور۔جنوبی پنجاب کے سیکرٹریوں کو اپنے صوبہ میں گریڈ اٹھارہ تک کے ملازمین کے تبادلوں کے اختیارات حاصل ہوں گے جبکہ انہیں اسی حوالے سے مالی اور ترقیاتی اختیارات بھی دئے گئے ہیں، کیونکہ پنجاب کے محکموں میں بھی سیکرٹریوں کو یہی اختیارات حاصل ہیں جبکہ گریڈ اٹھارہ سے اوپر تبا دلوں کے اختیارات پہلے ہی چیف سیکرٹری اور چیف منسٹر کے پاس ہوتے ہیں۔نئی بھرتیوں کے سلسلے میں جنوبی پنجاب گریڈ سولہ تک کے سرکاری اہلکار بھرتی کر سکنے کا مجاذ ہو گا۔ اس ترمیم کے بعد جنوبی پنجاب کے عوام کے نوے فیصد سے زیادہ کام اب ان کے اپنے صوبہ جنوبی پنجاب کے سیکریٹیرٹ میں ہی ہوا کریں گے اور ان کی یہ تکلیف دور ہو جائے گی کہ انہیں ہر کام کے سلسلے میں لاہور آنا پڑتا ہے۔جنوبی پنجاب کے افسروں کی اے سی آرز بھی وہاں ہی لکھی جایا کریں گی۔ پنجاب حکومت کے اعلیٰ ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت نے جنوبی پنجاب کو با اختیار بنانے کے لئے آئین کے آرٹیکل 139 کے تحت یہ کام کئے ہیں۔جس کے لئے پہلے مرحلے میں جنوبی پنجاب میں سیکریٹیریٹ کا انفرا سٹرکچر بنایا گیا اور اب دوسرے مرحلے میں اسے آپریشنل کرنے کے لئے یہاں کمانڈ اینڈ کنٹرول منتقل کیا گیا ہے،جس کے بعد یہاں کے پچانوے فیصد مسائل اب یہاں ہی حل ہوں گے۔

پنجاب کابینہ

مزید :

صفحہ اول -