پانی کے بحران کیخلاف واٹر بورڈ ہیڈ آفس کا گھیراؤ کریں گے: حافظ نعیم الرحمن 

پانی کے بحران کیخلاف واٹر بورڈ ہیڈ آفس کا گھیراؤ کریں گے: حافظ نعیم الرحمن 

  

 کراچی(اسٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہاہے کہ جماعت اسلامی کی ”حقوق کراچی تحریک“ مسلسل جاری ہے، شہر بھر میں پانی کے بحران،غیر منصفانہ تقسیم اورشہریوں کے حقوق کیلئے  جمعہ 3ستمبرکو شہر بھر میں 100سے زائد مقامات پر دھرنے دئیے جائیں گے اور بدھ 8 ستمبر کو واٹر بورڈ ہیڈآفس کاگھیراؤ کریں گے، شہر کی کئی آبادیوں میں سرے سے پانی نہیں آتا،ڈیفنس اور ڈی ایچ اے جیسے علاقوں میں بھی حکمران پانی نہیں پہنچا سکے، حکومت کے پاس پانی کی منصفانہ تقسیم کا کوئی نظام ہی نہیں ہے، کثیرالمنزلہ عمارتوں کیلیے آر او پلانٹ لازمی قرار دیے جائیں، سمندر کے پانی کو میٹھا بنانے کی اچھی ٹیکنالوجی متعارف کرائی جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ نور حق میں پانی کے بحران اور بلدیاتی مسائل کے حوالے سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر نائب امراء ڈاکٹر اسامہ رضی،راجہ عارف سلطان،مسلم پرویز، سیکریٹری کراچی منعم ظفر خان،سیکریٹری اطلاعات زاہد عسکری اور سلمان شیخ موجود تھے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کراچی سمیت پورے ملک میں بلدیاتی انتخابات نہ کرانے پر متفق ہیں، کنٹونمنٹ الیکشن ہر صورت میں مقرر ہ وقت پر کرائے جائیں، انتخابات کا التواء کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا،موجودہ الیکشن میں عوام ان پارٹیوں کو مسترد کردیں گے جنہوں نے 30سال برسراقتدار رہنے کے باوجود کراچی کے شہریوں کے لیے پانی کا مسئلہ حل نہیں کیا،کراچی کے شہریوں کو پانی کی فراہمی کیلئے ٹینکر مافیا کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا۔ مافیا،واٹر بورڈ کی پانی کی لائنوں سے پانی چوری کرکے شہریوں کو منہ مانگے داموں فروخت کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کراچی کو ساڑھے 14سو ملین گیلن یومیہ پانی کی ضرورت ہے، وفاقی اور صوبائی حکومت 650ملین گیلن پانی کی فراہمی کے منصوبے K4کو اب 260ملین گیلن فراہمی کا منصوبہ بنانا چاہتی ہے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ کے فور منصوبے پر صوبائی حکومت نے 15ارب روپے ضائع کر دیئے، عوام کے پیسے کا حساب کون دے گا،وفاقی حکومت نے اس سال ترقیاتی منصوبوں کے بجٹ میں K4منصوبے کیلئے کوئی رقم نہیں رکھی،کراچی میں پانی کے بحران نے مرکزی و صوبائی حکومتوں کی نااہلی بے نقاب کر دی، وفاقی اور صوبائی حکمران اگر K4منصوبے کو مکمل کرنے میں سنجیدہ ہوتے تو منصوبہ ڈھائی سے 3برس قبل مکمل ہوجاتا،وفاقی اور صوبائی حکومت پانی کے مسئلے پر سنجیدہ اقدامات کریں، عوام کو کہانی نہیں پانی چاہیئے، حکومتی سطح پر عوامی مسائل حل کرنے کے لئے عملی اقدامات کے بجائے صرف اعلانات کیے جا رہے ہیں،ایم کیوایم نے بھی اپنی نااہلی اور بد دیانتی کے باعث کراچی کے شہریوں کو پانی کے لیے ترسا دیا ہے، پی ٹی آئی، پیپلز پارٹی، ایم کیو ایم اور ن لیگ نے کراچی کے لئے پانی میں کوئی اضافہ نہیں کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ نعمت اللہ خان کے K3منصوبے کے بعد پانی کا کوئی اور منصوبہ نہیں بنا،نعمت اللہ خان نے ہی K4منصوبے کے لئے عملی اقدامات کا آغاز کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی شہر میں مسائل کے حل کیلئے سرگرم ہے،کراچی کے شہریوں کے مسائل حل ہونے تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -