افغانستان سے نکلنے والا آخری امریکی فوجی میجر جنرل کرس ڈونا ہیو کون ہے؟ وہ تمام باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں

افغانستان سے نکلنے والا آخری امریکی فوجی میجر جنرل کرس ڈونا ہیو کون ہے؟ وہ ...
افغانستان سے نکلنے والا آخری امریکی فوجی میجر جنرل کرس ڈونا ہیو کون ہے؟ وہ تمام باتیں جو آپ جاننا چاہتے ہیں
سورس: Twitter

  

 کابل (ڈیلی پاکستان آن لائن) پیر کی شب امریکہ کی افغانستان میں 20 سالہ طویل ترین جنگ کا اختتام آخری فوجی میجر جنرل کرس ڈونا ہیو کے انخلا کے ساتھ ہوگیا ہے۔ امریکہ کی سینٹ کام کی جانب سے گزشتہ شب جنرل ڈونا ہیو کی تصویر شیئر کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ وہ حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر سی 17 کارگو طیارے میں سوار ہونے والے آخری امریکی فوجی ہیں۔

ہندوستان ٹائمز کے مطابق میجر جنرل کرس ڈونا ہیو امریکی فوج کی 82 ویں ایئر بورن ڈویژن کے کمانڈنگ آفیسر ہیں۔ یہ ڈویژن امریکی فوج کی شمالی کیرولائنا کی 18 ویں کور کا حصہ ہے۔

یو ایس اے ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق میجر جنرل ڈونا ہیو کو رواں ماہ ہی کابل ایئر پورٹ کی سیکیورٹی کیلئے افغانستان میں تعینات کیا گیا تھا۔ انہوں نے 1992 میں امریکہ کی ملٹری اکیڈمی سے گریجوایشن کرنے کے بعد بطور سیکنڈ لیفٹیننٹ کمیشن حاصل کیا تھا۔

میجر جنرل کرس ڈونا ہیو کو 17 بار مختلف مواقع پر افغانستان، عراق، شام ، شمالی افریقہ اور یورپ میں آپریشنز کی نگرانی کیلئے تعینات کیا گیا۔ اپنے کریئر میں وہ پینٹاگون میں چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کے اسسٹنٹ کے طور پر بھی خدمات سرانجام دے چکے ہیں۔ 

خیال رہے کہ 9 ستمبر 2001 کو القاعدہ نے امریکہ کی اس وقت کی سب سے بلند ترین عمارت ورلڈ ٹریڈ سنٹر پر مسافر طیاروں سے حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں فلک بوس عمارت زمین بوس ہوگئی تھی۔ اس حملے میں تین ہزار امریکی شہری ہلاک ہوئے تھے۔

اس وقت کے امریکی صدر جارج ڈبلیو بش نے حملے کے ذمہ داروں کی حوالگی کا مطالبہ کیا تھا تاہم طالبان نے امریکہ کا یہ مطالبہ مسترد کردیا جس کے بعد امریکہ نے اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر افغانستان پر 7 اکتوبر 2001 کو حملہ کردیا تھا۔ امریکہ کی یہ جنگ 20 سال تک جاری رہنے کے بعد گزشتہ روز اپنے اختتام کو پہنچی ہے۔

مزید :

اہم خبریں -بین الاقوامی -