پاک سعودی اعلیٰ رابطہ کونسل کے قیام کا معاہدہ ،سعودی کابینہ نے بڑا فیصلہ کر لیا 

پاک سعودی اعلیٰ رابطہ کونسل کے قیام کا معاہدہ ،سعودی کابینہ نے بڑا فیصلہ کر ...
پاک سعودی اعلیٰ رابطہ کونسل کے قیام کا معاہدہ ،سعودی کابینہ نے بڑا فیصلہ کر لیا 

  

 ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن )سعودی کابینہ نے منگل کو شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی زیر صدارت ورچوئل اجلاس میں سعودی پاکستانی اعلی رابطہ کونسل کے قیام کے معاہدے کی منظوری دی ہے۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’ایس پی اے‘ کے مطابق شاہ سلمان نے اجلاس کے آغاز میں کابینہ کے ارکان کو گزشتہ دنوں برادر اور دوست ممالک کےساتھ سعودی عرب کےمذاکرات اور ملاقاتوں میں ہونےوالی بات چیت سے آگاہ کیا۔مذاکرات اور ملاقاتیں دوطرفہ تعاون کے استحکام اور ہر سطح پر تعلقات کو مزید بہتر اور مضبوط بنانے کے لیے کیے گئے تھے۔سعودی کابینہ نے روس اور سعودی عرب کے درمیان فوجی تعاون کے معاہدے کو عالمی امن و استحکام میں معاون قرار دیا ہے۔

کابینہ نے قطر اور سعودی عرب کے درمیان رابطہ کونسل کے قیام سے متعلق ترمیم شدہ پروٹوکول پر دستخط کے حوالے سے بھی اطمینان کا اظہار کیا ہے۔قائم مقام وزیر اطلاعات ڈاکٹر عصام بن سعد نے اجلاس کے بعد ایس پی اے کو بتایا کہ کابینہ میں بغداد کانفرنس برائے تعاون و شراکت میں سعودی عرب کی شرکت کا موضوع زیر بحث آیا،اس حوالے سے کابینہ نے اس عزم کا اظہار کیا کہ سعودی عرب برادر ملک عراق کے روشن مستقبل کی تشکیل میں اس کے ساتھ کھڑا ہے اور اس کی تعمیر و ترقی میں تعاون کے لیے پرعزم ہے۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب چاہتا ہے کہ عراق عالم عرب ہی نہیں علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر بھی اپنا کردار ادا کرے اور دنیا بھر کو درپیش دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خطرے سے نمٹنے کے لیے خطے کے ممالک کے ساتھ یکجہتی اور تعاون کا سلسلہ جاری رکھا جائے۔کابینہ نے متعدد فیصلے بھی کیے۔ عمانی، سعودی رابطہ کونسل سے متعلق مفاہمتی یادداشت کی منظوری دی۔ وزیر داخلہ کو سری لنکا کے ساتھ تحویل مجرمین کے معاہدے پر دستخط کا اختیار تفویض کیا۔کابینہ نے وزیر خارجہ کو ایسٹونیا کے ساتھ سیاسی مشاورت کے حوالے سے مفاہمتی یادداشت کابینہ نے جی سی سی ممالک کے مشترکہ کسٹم قانون میں ترمیم کی بھی منظوری دی ہے۔

مزید :

قومی -عرب دنیا -