خناق کے مریض اور اس سے ہونیوالی ہلاکتوں کی تفصیلات پیش

خناق کے مریض اور اس سے ہونیوالی ہلاکتوں کی تفصیلات پیش

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہورہائیکورٹ میں خناق کے مرض میں مبتلا مریضوں اور مرض سے ہونے والی ہلاکتوں کی تفصیلات پیش کر دی گئی ہیں ،متعلقہ حکام کی طرف سے پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق 2013ء میں 165بچے خناق میں مبتلا ہوئے جن میں سے21موت کے منہ میں چلے گئے ۔2014ء میں 45بچوں کو خناق کا مرض لاحق ہوا جن میں سے 8چل بسے جبکہ 2015ء میں 153بچے اس مرض میں مبتلا ہوئے جن میں سے 27جاں بحق ہوگئے ۔مسٹر جسٹس خالد محمود خان نے اس کیس میں درخواست گزار اور فریقین کے وکلاء کو حتمی بحث کے لئے طلب کر لیاہے۔درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ چلڈرن ہسپتال میں 27سے زائد بچے ادویات اور وینٹی لیٹر نہ ہونے سے دم توڑ گئے۔ ادویات کی عدم فراہم اور وینٹی لینٹر نہ ہونا محکمہ صحت کے افسران کی واضح غفلت ہے۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ غفلت کے مرتکب افسران کے خلاف قتل کے مقدمات درج کرنے کا حکم دیا جائے۔ڈی جی ہیلتھ پنجاب نے عدالتی حکم پر خناق کے مرض میں مبتلا مریضوں اور مرض سے ہونے والی ہلاکتوں کی تفصیلات پر مبنی رپورٹ عدالت میں پیش کر دی۔انہوں نے عدالت کو بتایا کہ خناق کے مرض میں مبتلا مریض تشویش ناک حالت میں ہسپتالوں میں لائے گئے،ہسپتالوں میں خناق کی ادویات مفت فراہم کی گئیں جبکہ مرنے والے مریض ادویات کی کمی کی بناء پر نہیں بلکہ طبعی موت کا شکار ہوئے ۔جس پر عدالت نے کیس کی مزید سماعت 15جنوری تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو حتمی بحث کے لئے طلب کر لیاہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...