لاہور ائیرپورٹ پر سالانہ اربوں کی منی لانڈرنگ کا انکشاف، اہم شخصیات کے ملوث ہونیکا امکان

لاہور ائیرپورٹ پر سالانہ اربوں کی منی لانڈرنگ کا انکشاف، اہم شخصیات کے ملوث ...

لاہور(ارشد محمود گھمن)علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ لاہورپر سالانہ اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کا انکشاف ہو ا ہے ۔اہم سیاسی وکاروباری شخصیات سمیت بیوروکریٹس کے ملوث پائے جانے کا امکان ہے۔کسٹمز انسپکٹرز کروڑ پتی بن گئے اعلیٰ حکام نے چپ کا روزہ رکھ لیا۔منی لانڈرنگ کی وجہ سے قومی خزانہ کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے جبکہ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے کے ائیر پورٹ پر موجود عملہ کا بھی ملوث ہونے کا اندیشہ ہے۔تفصیلات کے مطابق ماڈل ایان علی کی بیرون ملک5لاکھ ڈالرسے زائد منی لانڈرنگ کی کوشش کے دوران گرفتاری کے بعد بھی یہ سلسلہ بند نہیں ہو ا اور کئی ماڈلز نے نئے روپ دھار کر سیاسی و کاروباری شخصیات کے لئے منی لانڈرنگ کا کاروبار شروع کر رکھا ہے ،جن کے پیچھے بااثر شخصیات ہونے کی وجہ سے ماڈلز کی ائیر پورٹ پر سخت چیکنگ کی بجائے ان کو فری ہینڈ اور پروٹوکول دیا جاتا ہے جس وجہ سے وہ باآسانی ملک سے پرواز کرتی ہیں اور ملک میں آتی ہیں ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ منی لانڈرنگ کرنے والی نئی ماڈلز کے کسٹمز کاؤنٹر پر پہلے سے وی آئی پی پروٹوکول کا بندوبست کر دیا جاتا ہے اور جب ماڈل ائیرپورٹ پر پہنچتی ہیں تو ان کی چیکنگ کرنے کی بجائے ان کو پروٹوکول کے ساتھ روانہ کیا جاتا ہے۔ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ ماڈلز کو پروٹوکول کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ متعلقہ انسپکٹرز اور دیگر عملہ رشوت کی مد میں پہلے ہی بھاری رقم وصول کر چکا ہو تا ہے اور متعدد کسٹمز حکام سیاسی و کاروباری شخصیات کی سفارشات پر اہم عہدوں پر تعینات ہیں جس کو فائدہ اٹھاتے ہوئے بااثر شخصیات منی لانڈرنگ کرانے میں کامیاب ہو جاتی ہیں ۔یہ بھی معلوم ہو ا ہے کہ ائیر پورٹ پر سیما کے نام سے متعارف ایک ماڈل منی لانڈرنگ کرتی ہے جس کو کسٹمز حکام پکڑنے سے قاصر ہیں کیونکہ اس کے پیچھے بااثر شخصیات کا ہاتھ ہے۔اس حوالے سے مؤقف لینے کیلئے ڈپٹی کلیکٹر کے ترجمان انسپکٹر طارق امیر خان نے بتایا کہ کسٹمز ائیر پورٹ کے پاس سیما نامی ماڈل کے منی لانڈرنگ میں ملوث ہونے کی اطلاعات نہیں ہیں تمام الزامات بے بنیادہیں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...